رپورٹ پر کوئی بھی اعتراض اٹھاسکتا ہے

رپورٹ پر کوئی بھی اعتراض اٹھاسکتا ہے
 رپورٹ پر کوئی بھی اعتراض اٹھاسکتا ہے

  



لاہور ( آن لائن) سپریم کورٹ بار کی سابق صدر عاصمہ جہانگیر نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی سپریم کورٹ نہیں بلکہ تحقیقاتی ٹیم ہے جے آئی ٹی کی رپورٹ پر کوئی بھی اعتراض اٹھاسکتا ہے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عاصمہ جہانگیر نے کہا کہ عدالتی بیلف بھی ہائیکورٹ کا پابند ہوتا ہے لیکن اسکی رپورٹ پر من و عن عملدآمد یا فیصلہ نہیں ہوتا جب وکیل دلائل دیتے ہیں۔ تو ہر پہلو سامنے آ جاتا ہے اور عدالت قانون کے مطابق فیصلہ کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر فیصلے سٹرکوں پر ہونے ہیں تو پھر انصاف کے اداروں کا مقصد ختم ہو جاتا ہے۔ عاصمہ جہانگیر کا کہنا تھا کہ یہ ممکن نہیں ایک پارٹی ہاتھوں سے نوچنا شروع کر دے اور دوسرا فریق ہاتھ باندھ کر کھڑا رہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر میڈیا ٹرائل ہی کرتا ہے تو عدالتوں کو بند کر دیا جائے۔ انہوں نے سپریم کورٹ سے استدعا کی کہ پہلے عدالتیں فیصلہ کریں پھر میڈیا ٹرائل کیا جائے۔

مزید : صفحہ اول


loading...