کراچی ،نا معلوم لاشوں کی شناخت سے متعلق سی پی ایل سی کی ویب سائٹ کا آغاز

کراچی ،نا معلوم لاشوں کی شناخت سے متعلق سی پی ایل سی کی ویب سائٹ کا آغاز

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)گورنر سندھ / سرپرست محمد زبیر نے سٹیزن پولیس لائژن کمیٹی (CPLC) کے منصوبہ نا معلوم لاش کی شناخت اور چوری / چھینے گئے موبائل فونز سے متعلق ڈیزائن کردہ ویب سائٹس کا بٹن دبا کر آغاز کردیا ہے۔ ان ویب سائٹس کے ایڈریس shanakht.cplc.org.pk اور mobilephone.cplc.org.pk ہے،ویب سائٹس کے ذریعہ نا معلوم لاش کی شناخت میں مدد اورخریدتے وقت چوری / چھینے گئے موبائل فون سے متعلق خریدار کو فوری آگاہی ہو سکے گی ۔اس موقع پر گورنر سندھ نے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ حاصل کرکے معاشرہ کو نہ صرف ترقی بلکہ جرائم سے پاک کرنے میں مدد ملتی ہے ، اداروں کو جدید ٹیکنالوجی کا زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانا چاہئے۔ گورنر سندھ نے کہا کہ جرائم کی بیخ کنی اور عوام کی مشکلات کے حل میں سٹیزن پولیس لائژن کمیٹی کا کردار نہایت اہمیت کا حامل ہے ، اپنے قیام کے بعد سے سی پی ایل سی نے نمایاں خدمات انجام دی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ان دو ویب سائٹس کا اجراء سی پی ایل سی کی جانب سے عوام کے مسائل کے حل کو کرنے کی ایک اور کاو ش ہے ۔انہوں نے کہا کہ امن و امان کی بحالی میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ساتھ سی پی ایل سی نے بھی نمایاں کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ نا معلوم لاش کی شناخت ایک گھمبیر مسئلہ ہے ،شناخت نہ ہونے کے باعث فلاحی اداروں کو ورثاء کے انتظار میں نامعلوم لاشوں کو طویل عرصہ تک سرد خانوں میں رکھنا پڑتا ہے ، سی پی ایل سی نے اس مسئلہ کے حل کے لئے جدید ٹیکنالوجی سے بھرپور استفادہ حاصل کرتے ہوئے فلاحی اداروں ایدھی اور چھیپا کے تعاون سے اس ضمن میں ایک ویب سائٹ کا آغاز کیا ہے جس سے لوگوں کو با آسانی اپنے پیاروں کی تلاش میں آسانی ہو گی اب انھیں طویل مسافت طے کرکے سرد خانوں کے چکر نہیں لگانا پڑینگے اب صرف انٹر نیٹ کے ذریعہ ویب سائٹ پر دستیاب معلومات اور تصاویر سے اپنے پیاروں کی شناخت کرسکیں گے ۔انہوں نے کہا کہ سی پی ایل سی کی جانب سے چوری اور چھینے گئے موبائل فونز سے متعلق ویب سائٹ کے اجراء سے اس ضمن میں خریداری کے امکانات تقریباً ختم ہو جائیں گے ، خریدار کو موبائل فون سے متعلق فوری معلومات ویب سائٹ پر ملنے سے بہت آسانی ہوگی ۔انہوں نے سی پی ایل سی کی ہیلپ لائن 1102 کے 24 گھنٹے دستیابی کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے عوام کو بہت بہتر سہولت حاصل ہوئی ہے ۔اس سے قبل سی پی ایل سی کے چیف زبیر حبیب نے گورنر سندھ کو ویب سائٹ سے متعلق تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نامعلوم لاشوں کی شناخت قانون نافذ کرنے والے اداروں کے لئے ہمیشہ ایک چیلنج رہی ہے جس کی بڑی وجہ نعش کے پاس سے کسی بھی قسم کی معلومات کا نہ ملنا ہے جس کے باعث ان لاشوں کو طویل عرصہ تک سرد خانوں میں رکھا جا تا ہے اور ایک طویل انتظار کے بعد لاشوں کی امانتاً تدفین بھی کی کردی جاتی ہے ،سی پی ایل سی نے حوصلہ افزا ء نتائج حاصل نہ ہونے کی وجہ سے جدید ٹیکنالوجی سے استفادہ حاصل کرنے کے فیصلہ کے بعد اس ضمن میں ایک ویب سائٹ ’’شناخت ‘‘ کا آغاز کیا ہے ،ویب سائٹ کے اجراء میں فلاحی اداروں ایدھی اور چھیپا کا بھرپورتعاون حاصل ہے ، اب ویب سائٹ کے ذریعہ لوگوں کو اپنے پیاروں کی شناخت میں آسانی ہو سکے گی ، ویب سائٹ کے ذریعہ نامعلوم لاشوں کی شناخت نادرا ریکارڈ کے مطابق بائیو میٹرک ٹیکنالوجی سے کی جا ئے گی۔انہوں نے مزید بتایا کہ سی پی ایل سی کے پاس چھینے یا چوری کے گئے دس لاکھ موبائل فونز کے IMEI نمبرزکا ریکارڈ دستیاب ہے، تصدیق کے بعد متعلقہ حکام کے تعاون سے ان موبائل فونز کو بلاک کردیا گیا ہے، اور کئی ہزار وں بازیاب کئے گئے فونز تصدیق کے بعد ان کے مالکان کو واپس بھی کر دیئے گئے ، سی پی ایل سی نے چوری اور چھینے گئے موبائل فون کی خریدو فروخت کے سدباب کے لئے ویب سائٹ کا اجراء کیا ہے تاکہ لوگوں کو موبائل فون خریدتے وقت ویب سائٹ کے ذریعہ پتہ ہو سکے کہ خریدا گیا موبائل فون چوری / چھینا ہوا نہیں ، اس طرح چوری یا چھیننے والوں اور بیچنے والوں کی بھی حوصلہ شکنی ہوگی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ حیدرآباد میں بھی شناخت منصوبہ کا جلد افتتاح کیا جائے گا۔

مزید : کراچی صفحہ اول