وکلاء وقت ضائع کرنے کے بجائے تیاری کر کے پیش ہوں،سپریم کورٹ

وکلاء وقت ضائع کرنے کے بجائے تیاری کر کے پیش ہوں،سپریم کورٹ

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی) سپریم کورٹ نے قرار دیا ہے کہ عدالتیں پنچائت کے تحت نہیں قانونی ضابطے کے تحت چلتی ہیں، وکلاء تیاری کر کے عدالتوں میں پیش ہوں ،قانون میں کوئی شارٹ کٹ نہیں۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں جسٹس شیخ عظمت سعید کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے سرکاری زمین کی الاٹمنٹ سے متعلق نظر ثانی کی درخواست کی سماعت کے دوران مزید ریمارکس دیئے کہ اب تو حالت یہ ہے کہ بعض وکلاء نے قسم کھا رکھی ہے کہ قانون کی کتاب کو کھول کر نہیں دیکھنا۔عدالتوں میں بیٹھے ججز وکلاء کو پڑھانے نہیں آتے ،نہ ہی ہم نے لاء کالج کھول رکھا ہے،عدالت نے مزید ریمارکس دیئے کہ ۔ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل صبح صادق وٹو نے محکمہ بورڈ آف ریونیو کی جانب سے عدالت میں جواب داخل کرایا۔عدالتی ہدایت کے باوجود درخواست گزار کی وکیل فخرالنساء کھوکھر کی جانب سے متعلقہ قانون کا حوالہ نہ دینے پر عدالت نے ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے مذکورہ ریمارکس دیئے ۔عدالت نے کیس کی مزید سماعت غیر معینہ ملتوی کر دی

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...