”فائنل میچ میں شاداب اور حسن کی ایک حرکت پر بڑا غصہ آیا تھا جب۔۔۔“ کپتان نے میچ میں پیش آنے والے واقعے سے پردہ اٹھا دیا، وہ کیوں غصے میں آ گئے تھے؟ جان کر آپ بھی کہیں گے ”ہاں! ہمیں بھی غصہ چڑھا تھا“

”فائنل میچ میں شاداب اور حسن کی ایک حرکت پر بڑا غصہ آیا تھا جب۔۔۔“ کپتان نے ...
”فائنل میچ میں شاداب اور حسن کی ایک حرکت پر بڑا غصہ آیا تھا جب۔۔۔“ کپتان نے میچ میں پیش آنے والے واقعے سے پردہ اٹھا دیا، وہ کیوں غصے میں آ گئے تھے؟ جان کر آپ بھی کہیں گے ”ہاں! ہمیں بھی غصہ چڑھا تھا“

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) آئی سی سی چیمپینز ٹرافی کے فاتح کپتان سرفراز احمد نے بھارت کیخلاف فائنل میچ میں کیدھار جادیو کی وکٹ ملنے پر انتہائی پرجوش ہونے اور حسن علی اور شاداب خان پر غصہ چڑھنے سے متعلق انتہائی دلچسپ انکشاف کیا ہے جسے جان کر آپ بھی ان سے اتفاق کریں گے۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔ ”پاکستان جانے سے پہلے ہمیں بتایا ہی نہیں تھا کہ۔۔۔“ کمار سنگاکارا نے اپنے بورڈ پر بڑا الزام لگا دیا، لاہور میں حملے سے متعلق ایسی بات کہہ دی کہ پاکستانی بھی دنگ رہ گئے

چیمپئنز ٹرافی کے فائنل میں قومی بلے بازوں نے جہاں اپنی شاندار بیٹنگ سے بھارتی ٹیم کو پہاڑ جیسا ہدف دیا تو وہیں باو¿لرز نے بھی عمدہ باو¿لنگ کر کے یہ میچ ان سے چھین لیا تھا۔ ابتدائی بلے بازوں کے آﺅٹ ہونے کے بعد کیدھار جادیو اور ہردیک پانڈیا نے مزاحمت کرتے ہوئے میچ میں واپس آنے کی کوشش کی تاہم وہ بھی ناکام ہوئے اور جب کیدھار جادیو کی وکٹ ملی تو کپتان اور شاداب خان انتہائی پرجوش دکھائی دئیے۔

اس بارے جب ان سے سوال کیا گیا کہ وہ عام طور پر اتنے پرجوش نظر نہیں آتے مگر کیدھار جادیو کی وکٹ ملنے پر ایسا ردعمل کیوں نظر آیا؟ جس پر انہوں نے کہا کہ جب مڈل آرڈر بلے باز کیدھار جادیو کھیلنے آئے تو قومی باو¿لرز شاداب خان اور حسن علی نے انہیں غیر ضروری گیندیں کروائیں جس سے وہ سخت ناراض ہوئے۔

سرفراز احمد نے بتایا کہ جب کیدھار جادیو نے لگاتار دو چوکے مارے تو اس موقع پر میچ دلچسپ ہو گیا تھا تاہم جب وہ صرف 9 رنز بنا کر واپس پویلین لوٹے تو میں نے پرجوش انداز میں ان کے آﺅٹ ہونے پر خوشی منائی۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔ ”مداحوں سے درخواست ہے کہ۔۔۔“ عمر اکمل نے اپنی تصویر شیئر کی اور ساتھ ہی مداحوں سے ایسی درخواست کر دی کہ سب کی ہنسی چھوٹ گئی، ایسی بات کہہ دی کہ جان کر آپ بے اختیار کہہ اٹھیں گے”فائدہ کوئی نہیں ہو گا“

دلچسپ بات یہ ہے کہ اسی موقع پر پاکستانی قوم بھی شدید غصے میں آ گئی تھی جب کیدھار جادیو اور ہردیک پانڈیا بیٹنگ کر رہے تھے اور سب کا یہی کہنا تھا کہ اس اہم موقع پر، جب بھارت کے تقریباً تمام نامور بلے باز آﺅٹ ہو چکے ہیں، انہیں ایسی گیندیں کروا کر چھکے کھانے کی کیا ضرورت ہے، ذرا سی عقل استعمال کریں اور انہیں بھی جلد آﺅٹ کر دیں، اور پھر ایسا ہی ہوا اور جلد ہی دونوں پویلین لوٹ گئے اور پاکستانی تاریخ میں ایک اور یادگار رقم ہو گئی۔

مزید : کھیل