پاکستان نے داعش کو شکست دینے اور موصل کی آزادی میں عراق کی مدد کی : عراقی سفیر کا انکشاف

پاکستان نے داعش کو شکست دینے اور موصل کی آزادی میں عراق کی مدد کی : عراقی سفیر ...
پاکستان نے داعش کو شکست دینے اور موصل کی آزادی میں عراق کی مدد کی : عراقی سفیر کا انکشاف

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن ) عراقی سفیر نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان نے کالعدم داعش کو شکست دینے کیلئے عراقی فورسز کی مدد کی ۔

”ڈان “ کے مطابق عراقی سفیر علی یاسین محمد کریم کے حالیہ بیان نے پاکستانی شہریوں کو بھی حیران کر دیا جن کا کہنا ہے کہ حکومت پاکستان نے عراقی حکومت کو داعش کے خلاف لڑائی میں مدد فراہم کی جس کے باعث تین سالہ قبضے کے بعد دہشتگردوں سے شہر موصل کو آزاد کرانے میں مدد ملی ۔

سفارتخانے میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ داعش سے لڑائی میں عراق کی مدد کرنے والے متعدد ممالک میں پاکستان بھی شامل تھا ۔اس سے قبل داعش کے خلاف لڑائی میں پاکستانی تعاون کو عراقی یا پاکستانی حکام کی جانب سے اجاگر نہیں کیا گیا تھا ۔پاکستان سمیت دیگر ممالک کے تعاون کے بعد بلآخر عراقی سیکیورٹی فورسز 9ماہ تک جاری رہنے والے آپریشن کے باعث موصل کو خالی کرانے میں کامیاب ہوئی ہیں جہاں داعش کے دہشتگرد اور اہم کمانڈر پناہ لیتے تھے۔

مزید خبریں پڑھیں، چودھری نثار کے تحفظات پر وزیر اعظم نوازشریف بھی بول پڑے ، کھری کھری سنا دیں

پاکستانی تعاون کے حوالے سے بات کرتے ہوئے سفیر نے کہا کہ عراق نے دہشتگرودں کے بارے خفیہ اطلاعات حاصل کرنے کے علاوہ اسلحہ ، جنگی سازو سامان اور فوجی طبی امداد بھی حاصل کی جبکہ داعش کیخلاف کارروائیوں میں شریک بعض عراقی پائلٹس کو پاکستان میں تربیت تک دی گئی ۔

علی یاسین محمد کریم کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک کے درمیان جاری انٹیلی جنس تعاون سے عراق کو خطے میں داعش کو پھیلنے سے روکنے میں مدد ملے گی ۔

عراق میں داعش کی کارروائیوں میں پاکستان کے ملوث ہونے کو رد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ”برے افراد نے پاکستان کی آبادی کے بہت چھوٹے سے حصے کی نمائندگی کی “۔ 100 سے زائد قومیتوں کے لوگ داعش کی صفوں کا حصہ تھے۔”داعش کیخلاف جنگ میں پاکستانی عوام عراق کے ساتھ بہت تعاون کر رہی تھی“۔انہوں نے مشرق وسطیٰ میں پاکستان کی غیر جانبداری کی پالیسی کی بھی تعریف کی ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...