نواز شریف نے وطن واپس آکر مخالفین کے منہ بند کر دیئے

نواز شریف نے وطن واپس آکر مخالفین کے منہ بند کر دیئے

شرقپور شریف (سیّد طہماسپ علی نقوی ) میاں محمد نواز شریف نے وطن واپس آ کر یہ ثابت کر دیا ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ محبت کرتے ہیں قیدو بند سے وہ گھبرانے والے نہیں اور ایسے حالات میاں محمد نواز شریف نے پہلے بھی دیکھے ہیں ۔میاں محمد نواز شریف اور مریم نواز دونوں وطن واپس پہنچے تو انہیں ائیر پورٹ سے ہی گرفتار کر کے اڈیالہ جیل میں بند کرنا جمہوری روایات کے خلاف ہے اور انہیں بے بنیاد مقدمات میں سزاد ی گئی بیرون ملک جب وہ اپنی بیمار اہلیہ کے پاس موجو دتھے سزا سنائی گئی۔ انہوں نے وطن واپس پہنچ کر یہ ثابت کر دیا کہ وہ پاکستانی قوم کے ساتھ ہیں اور مخالفین کے منہ بند ہو گئے۔ ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں جن میں حلقہ این۔اے 120کی انتخابی مہم کے کوارڈینیٹر رانا طاہر اقبال حلقہ پی پی 139 میں مسلم لیگ ن کے نامزد امید وار صاحبزادہ میاں جلیل احمد شرقپوری ، مخدو م سیّد غیور عباس بخاری ، حلقہ پی پی 138 میں مسلم لیگ (ن) کے نامزد امید وار میاں عبدالرؤف ،میاں عمران علی اشرف یعقومیہ ، قاضی احتشام عارف شامی نے ’’روز نامہ پاکستان‘‘ کے سروے میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا ہے۔ حلقہ این اے 120 کی انتخابی مہم کے کوارڈینیٹر رانا طاہر اقبال نے کہاکہ پاکستانی قوم میاں محمد نواز شریف سے دل و جان سے محبت کرتی ہے اور ان کی وطن واپسی پرپنجاب بھر سے لاکھوں کارکن سڑکوں پر نکلے اور لاہور میں میاں محمد نواز شریف مریم نواز کے استقبال کیلئے رکاوٹیں کھڑی ہونے کے باوجودپہنچے اور ہم کارکنوں کی عظمت کو سلام کرتے ہیں جنہوں نے مشکل حالات میں پارٹی کے ساتھ کندھے سے کندھا ملایا اور بلا جواز گرفتاریاں کی گئیں ہم اس کی مذمت کرتے ہیں۔گرفتاریاں ہمارا راستہ نہیں روک سکتیں۔ ائیر پورٹ پر میاں محمد نواز شریف ، مریم نواز کو گرفتار کیا گیا جو قابل مذمت ہے۔ انہیں اپنی فیملی ممبرز کے ساتھ ملاقات کا موقع دینا چاہیے تھا جو ان کا قانونی اور آئینی حق تھا وہ ملک کے تین بار وزیر اعظم منتخب ہوئے آج بھی قوم میاں محمد نواز شریف کے ساتھ ہے مسلم لیگ ن کے نامزدامید وار حلقہ پی پی 139 صاحبزادہ میاں جلیل احمد شرقپوری سابقہ ایم این اے و ضلع ناظم شیخوپورہ نے کہاکہ میاں محمد نواز شریف اور مریم نواز کے استقبال کوروکنے کیلئے جس طرح گرفتاریاں کیں وہ قابل مذمت ہیں کارکنوں اوران کی فیملی کو حراساں کیا گیا لیکن خراج تحسین کے مستحق ہیں مسلم لیگ ن کے کارکن جو گھروں سے باہر نکلے اور ثابت کردیا کہ ملک بھر میں مسلم لیگ ن آب و تاب کے ساتھ موجود ہے یہ ان لوگوں کا خواب ہی ہے جو مسلم لیگ ن کو ختم کرنا چاہتے ہیں۔مخدوم سیّد غیور عباس بخاری نے کہا کہ آج اگر بینظیر بھٹو زندہ ہوتیں تو وہ بھی میاں محمد نواز شریف کو سپور ٹ کرتیں وہ کسی کو بھی دیوار کے ساتھ نہیں لگنے دیتیں نواز شریف کو سزا کرپشن پر نہیں بلکہ نافرمانی پر دی گئی ہے ۔ ہم میاں محمد نواز شریف اور ان کی فیملی کے ساتھ ہیں کارکنوں نے سڑکوں پر نکل کر یہ ثابت کر دیا کہ مسلم لیگ (ن) جمہوریت پر یقین رکھتی ہے ۔مسلم لیگ ن کے حلقہ پی پی 138 کے نامزدامید وار میاں عبدالرؤف نے کہاکہ کارکنوں کو اپنے قائد میاں محمد نواز شریف کے استقبال سے دور رکھنے کیلئے چھاپے مارے گئے سڑکوں پر رکاوٹیں کھڑی کی گئیں لیکن کارکن ثابت قدم رہے اور وہ اپنے قائد کے استقبال کیلئے نکلے تو وہ ساری طاقتیں دیکھتی رہ گئیں کہ مسلم لیگ ن کے ورکروں کا سمند ر کہاں سے امڈ آیا ہے جس پارٹی کو کچھ قوتیں ختم کرنا چاہتی تھیں الیکشن سے چند روز قبل وہ پارٹی ابھر کرسامنے آ گئی ہے اس کو روکنا اب مشکل ہو چکا ہے ۔ میاں عمران علی اشرف یعقومیہ نے کہاکہ میاں محمد نواز شریف قوم کے محب وطن لیڈر ہیں عوام ان کے ساتھ کھڑی ہے اور استقبال کے موقع پر یہ منظر دیکھنے والاتھا کارکنوں کو با خوبی علم تھا کہ ہمیں اپنے قائد تک پہنچنے نہیں دیاجائے گا ائیر پورٹ کے اندرسے ہی میاں محمد نواز شریف اور مریم نواز کو گرفتار کر کے اڈیالہ جیل منتقل کیاجائے گا لیکن کارکن اپنے محب وطن لیڈرکی محبت میں باہر نکلے اور گرفتاریاں اور چھاپے انہیں نا روک سکے 25 جولائی کو عوام شیر پر مہر لگا کر میاں محمد نواز شریف کو کامیاب کروائیں گے ۔ قاضی احتشام عار ف شامی نے کہاکہ ہم کارکنوں کی گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہیں جمہوریت میں پر امن احتجاج ہر شہری کا حق ہے اور مسلم لیگ ن کے ورکرز نے ثابت کر دیا ہے کہ وہ پر امن شہری ہیں اور اپنے قائد میاں محمد نواز شریف کا استقبال کرنا ان کا جمہوری حق تھا لیکن اس حق کو عوام سے چھین لیا گیا جس پارٹی کو دبانا چاہتے تھے وہ پارٹی ایک بار پھر ابھر کر سامنے آ گئی ہے مسلم لیگی ورکروں کو شیر پر مہر لگانے سے کوئی نہیں روک سکتا شیر 25 جولائی کو دھاڑے گا مسلم لیگ ن کی فتح ہو گی۔

مزید : علاقائی