والدہ ، شہباز ، حمزہ کی نوا ز اور مریم سے ملاقات ، سابق وزیر اعظم کو ’’بی ‘‘ کلاس الاٹ ، نام ای سی ایل میں ڈالنے کی سمری وزیر اعظم کو ارسال

والدہ ، شہباز ، حمزہ کی نوا ز اور مریم سے ملاقات ، سابق وزیر اعظم کو ’’بی ‘‘ ...

راولپنڈی(جنرل رپورٹر) سابق وزیراعظم نواز شریف کی والدہ اپنے چھوٹے بیٹے شہباز شریف اور خاندان کے دیگر افراد کے ہمراہ نواز شریف اور مریم نواز سے ملاقات کیلئے اڈیالہ جیل گئیں،تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نواز شریف اور مریم نواز کی بیگم شمیم، شہباز شریف، حمزہ شہباز شریف سے اڈیالہ جیل کے سپرنٹنڈنٹ کے کمرے میں ملاقات کروائی گئی۔نواز شریف کے ڈاکٹر عدنان کارڈیالوجسٹ بھی فیملی کے ہمراہ تھے۔ شریف فیملی نواز شریف اور مریم نواز شریف سے ملاقات کیلئے نجی طیارے کے ذریعے نور خان ائیربیس پہنچی جہاں سے اڈیالہ جیل گئے ۔اس موقع پر سکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کئے گئے۔اس سے پہلے مسلم لیگ (ن) کی قانونی ٹیم مشاورت اور وکالت نامے پر دستخط کرانے کیلئے اڈیالہ جیل پہنچی اور جیل سپریٹنڈنٹ کی موجود گی میں سابق وزیر اعظم نواز شریف سے صرف پانچ منٹ ملاقات کر سکی تھی۔

ملاقات

راولپنڈی(جنرل رپورٹر ) سابق وزیر اعظم نواز شریف کو اڈیالہ جیل میں ناشتے میں انڈا پراٹھا اور چائے کی پیشکش کی گئی تاہم انہوں نے صرف چائے پی اور ساتھ کچھ ادویات استعمال کیں،مریم نواز نے بھی جی بھر کر ناشتہ نہیں کیا، مریم نواز نے اڈیالہ جیل کی خواتین بیرکس میں رات گزاری۔ تفصیلات کے مطابق نواز شریف نے اڈیالہ جیل کے ہائی سکیورٹی زون میں جبکہ مریم نے خواتین بیرکس میں رات گزاری، نواز شریف اور مریم نواز نے صبح فجر کی نماز ادا کی، بعد ازاں دونوں کو ناشتہ پیش کیا گیا۔نوازشریف اور مریم کو بیرک 1/5الاٹ کردی گئی۔مریم نواز نے کہا ہے کہ مجھے جیل میں بی کلاس کے حصول کیلئے درخواست دینے کا کہا گیا لیکن میں نے انکار کردیا ہے۔ یہ خالصتاًمیرا ذاتی فیصلہ ہے اور کسی قسم کا دباؤ نہیں ہے۔سابق وزیراعظم نوازشریف کو جیل میں بی کلاس دیدی گئی جبکہ مریم نواز کو سہالہ ریسٹ ہاؤس کی بجائے اڈیالہ میں ہی رکھا جائے گا۔ذرائع کے مطابق نواز شریف اور مریم نوازکو جیل میں رکھنے سے متعلق پلان میں تین مرتبہ تبدیلی کی گئی جس کے بعد نواز شریف کو اڈیالہ جیل میں بی کلاس منتقل کر دیا گیا۔جیل مینول کے مطابق بی کلاس میں ٹیلی ویڑن، اخبار اور بیڈ کی سہولت دی جاتی ہے جب کہ اٹیچ باتھ روم، پنکھا اور ایک مشقتی بھی دیا جاتا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ مریم نواز کو گزشتہ رات اڈیالہ جیل میں ہی رکھا گیا تھا اور انہیں سہالہ ریسٹ ہاؤس منتقل نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، انہیں خواتین کے سیل میں منتقل کیا گیا ہے۔نوازشریف اور مریم نواز کا لاہور سے لایا گیا ذاتی سامان بھی اڈیالہ جیل منتقل کردیا گیا۔سابق وزیراعظم کا ذاتی سٹاف سامان لے کر اڈیالہ جیل پہنچا جس میں کپڑے، شیونگ کا سامان اور دیگر چیزیں شامل ہیں جب کہ سامان میں نوازشریف کی ادویات بھی شامل ہیں،نوازشریف کے ذاتی سٹاف کو ملاقات کی اجازت نہ دی گئی ۔ذرائع کے مطابق نواز شریف اور مریم نواز کا میڈیکل چیک اپ بھی کیا گیا جس میں میڈیکل ٹیموں نے دونوں کو صحت مند قرار دیا۔اڈیالہ جیل میں عام قیدیوں سے رشتہ داروں اور عزیزواقارب کی ملاقات کیلئے جمعے کا دن مقرر ہے،سکیورٹی خدشات کے باعث جیل حکام نے نوازشریف سے ملاقات کرنے والوں کیلئے ایک دن پہلے جمعرات کا دن مقرر کیا ہے۔

نوازشریف

اسلام آباد(آئی این پی ) نگراں وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی نے نوازشریف اورمریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کیلئے سفارشات نگراں وزیراعظم کو بھجوا دی ،کابینہ آئندہ اجلاس میں فیصلہ کرے گی۔ تفصیلات کے مطابق نگراں وفاقی کابینہ کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس نگراں وزیر داخلہ اعظم خان کی زیرصدارت ہوا۔ اجلاس میں اتفاق رائے سے فیصلہ کیا گیا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے۔ نگراں وزیرداخلہ اعظم خان نے تصدیق کی ہے کہ کابینہ کی ذیلی کمیٹی نے نوازشریف اور ان کی صاحبزادی مریم نوازکا نام ای سی ایل پر ڈالنے کیلئے سفارشات نگراں وزیراعظم جسٹس (ر)ناصرالملک کوبھجوادی ہیں اور کابینہ آئندہ اجلاس میں نوازشریف اور مریم نواز کا نام ای سی ایل میں ڈالنے سے متعلق فیصلہ کرے گی۔دوسری طرف نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن(ر)صفدر ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا کیخلاف ہائی کورٹ میں اپیل دائر نہ کر سکے،6روز سے تیار اپیلیں ابھی تک دائر نہیں کی گئیں، عدالتی وقت ختم ہونے تک اپیلیں فائنل نہیں کی گئیں۔ہفتہ کو سابق وزیراعظم نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن(ر)صفدر نے گزشتہ روز بھی اپیلیں دائر نہ کیں،6روز سے تیار اپیلیں ابھی تک دائر نہیں کی گئیں، ایون فیلڈ ریفرنس میں سزا کے خلاف اپیل پیر کو دائر کرنے کا امکان ہے، عدالتی وقت ختم ہونے تک اپیلیں فائنل نہیں کی گئیں۔

ای سی ایل سفارش

مزید : صفحہ اول