انتخابی مہم کیلئے یکساں مواقع ، ورنہ نتائج متنازعہ ہونگے : بلاول بھٹو ، رکاوٹیں ڈالنے والے ناکام ہونگے : آصف زرداری

انتخابی مہم کیلئے یکساں مواقع ، ورنہ نتائج متنازعہ ہونگے : بلاول بھٹو ، ...

پشاور، اسلام آباد(نمائندہ خصوصی ،سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے دہشت گردی کیخلا ف جتنا کام ہونا چاہیے تھا وہ نہیں ہوا،سکیورٹی صورتحال کی وجہ سے مجھے محدود رکھا جارہا ہے، پیپلز پارٹی نے ہمیشہ مشکل حالات کا مقابلہ کیا آئندہ بھی کریں گے، پیپلز پارٹی کے امیدواروں کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں، انتخابی مہم کیلئے یکساں مواقع نہیں ملیں گے تو انتخابی نتائج متنا ز ع بن جائیں گے، پیپلز پارٹی ایسے حالات کے باوجود انتخابات کا کبھی بائیکاٹ نہیں کرے گی ۔گزشتہ روزپشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہو ئے بلاول بھٹو زرداری نے سانحہ مستونگ کے شہدا سے اظہار تعزیت کیااور کہاانتہاپسندی و دہشت گردی کا سلسلہ پھر سے سامنے آرہا ہے ، افسوس کی بات ہے انتہا پسندی اور دہشت گردی کا آج تک حل نہیں نکال سکے، انتخا بی مہم میں رکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں اور مختلف مقامات پر روکا جارہا ہے، کارکنوں پر وفاداری تبدیل کرنے کیلئے دباؤ ڈالا گیا،ان تمام حالات کے باوجود الیکشن میں بھرپور حصہ لیں گے۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا انتخابات سے قبل دھاندلی کی کوشش کی جارہی ہے لیکن پیپلزپارٹی میدان میں کھڑی ہے، مطالبہ ہے بروقت الیکشن کرائے جائیں۔ ہارون بلور کی شہادت کے بعد اظہار یکجہتی کے طور پر جلسہ ملتوی کیا اور مستونگ میں دھماکے کے باعث مالاکنڈ میں جلسہ منسوخ کرد یا ہے، اب مالاکنڈ جاؤں گا اور کارکنوں سے ملاقات کروں گا، اداروں کو مضبوط نہیں بنائیں گے تو عوام کے مسائل حل نہیں ہو سکیں گے، جما عتو ں اور اداروں کو ایک پیج پر لانے کیلئے پارلیمنٹ کو استعمال کرنا چاہیے، اقتدار میں آئے تو پارلیمان کے فورم سے سب کو ایک پیج پر لائیں گے۔ جب سے الیکشن مہم کیلئے کراچی سے نکلا ہوں مشکلات کا سامنا کیا ہے، پیپلز پارٹی کیلئے عوام کا رسپانس بہت اچھا ہے، حکومت بنا کر سب کو ایک پیج پر لاؤں گا، ہمارے پارٹی ورکرز کو کہا جاتا ہے کٹھ پتلی جماعت میں آ جاؤ، اپنے خدشات الیکشن کمیشن سمیت ہر جگہ اٹھائیں گے،ہم بروقت اور پر امن انتخابات چاہتے ہیں، پارٹی ورکرز یا عہدیدار کام نہیں کرتے تو ان کیخلاف ایکشن لینا پڑے گا۔دریں اثناء ترجمان بلاول بھٹو زرداری سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھرنے کہا ہے بلاول بھٹونے شہدا ء مستونگ کے سوگ میں 2دن کیلئے تمام سرگرمیاں معطل کردیں،جن لیڈروں کوشہداء مستونگ کاسوگ نہیں وہ قومی لیڈرکہلانے کے قابل نہیں۔نجی ٹی وی چینل ’’جیو نیوز ‘‘ کے مطابق سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھرنے کہا ہے ایک طرف 128 لوگوں کے جنازے ہوں، دوسری طرف جلسے ،ایساہم نہیں کرسکتے، قومی لیڈ ربننے کیلئے قوم کے ہردکھ دردمیں شریک ہوناپڑتاہے۔ جن لیڈروں کوشہداء مستونگ کاسوگ نہیں وہ قومی لیڈرکہلانے کے قابل نہیں،سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا بلاول بھٹو2دن بعدراولپنڈی سے دوبارہ انتخابی مہم کاآغازاور سکیورٹی خدشات کے باوجودملک بھرکے دورے کریں گے۔

بلاول بھٹو

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)سابق صدر مملکت اور شریک چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی آصف زرداری نے کہا ہے نیشنل ایکشن پلان پر من وعن عمل کیا جاتا تو حالات یہ نہ ہوتے،جب کوئی دہشت گردی کا شکار ہوتا ہے تو بہت تکلیف ہوتی ہے، دل روتا ہے، دہشتگردی کے شکار خا ند انوں کا درد سمجھ سکتے ہیں۔تفصیلات کے مطابق اپنے ایک بیا ن میں آصف زرداری کا کہناتھا 25جولائی پاکستان پیپلز پارٹی کے جیالوں کی فتح کا دن ہوگا،بلاول بھٹو زرداری کا منشور ترقی روشنی اور امن کا منشور ہے،پیپلز پارٹی کے راستے میں رکاو ٹیں نئی بات نہیں۔شکست کا خوف نہیں تو بلاول بھٹو کا راستہ کیوں روکتے ہو؟ بلا و ل کے راستے میں رکاوٹیں ڈالنے والے ناکام ہونگے۔ پاکستان پیپلزپارٹی کے کارکنوں کو پتہ ہے ان رکاوٹوں کو جمہوری طریقے سے کیسے عبور کرتے ہیں۔ 1988سے لے کر 2018تک ہر انتخابات کے دوران کبھی آئی جے آئی بنائی تو کبھی پیپلزپارٹی کی جیتی ہوئی نشستیں چو ر ی کی گئیں۔ پیپلزپارٹی کی قیادت کیخلاف کردار کشی کی کوئی نئی مہم نہیں ہے۔ جب کوئی خاندان دہشتگردی کا شکار ہوتا ہے تو انہیں بہت تکلیف ہوتی ہے، دہشتگردی کے شکار خاندانوں کا درد سمجھ سکتے ہیں۔

زرداری

مزید : صفحہ اول