سانحہ مستونگ ، آج سوگ کا اعلان ، شہدا ء سپرد خاک ، جنرل باوجہ کی نماز جنازہ میں شرکت صوبے کی فضا سوگوار ، پرچم سرنگوں رہا ، عالمی برادری کی دھماکے کی مذمت : سپریم کورٹ ، پاکستان بار کی ہڑتال ، سراج رئیسانی سولجررآف پاکستان قرار

سانحہ مستونگ ، آج سوگ کا اعلان ، شہدا ء سپرد خاک ، جنرل باوجہ کی نماز جنازہ ...

کوئٹہ،لاہور،اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک،نامہ نگارخصوصی ،نیوزایجنسیاں)سانحہ مستونگ کے شہداکو سپردخاک کردیا گیا،قبائلی و سیاسی رہنما نوابزادہ سراج رئیسانی کی نماز جنازہ موسی سٹیڈیم میں ادا کی گئی جنہیں بعد میں انکے آبائی علاقے کانک میں دفن کیاگیا ، نوابزاہ سراج رئیسانی شہید کی میت کو پاکستانی پرچم میں لپیٹ کر موسی سٹیڈیم لایا گیا،جہاں پاک فوج کے دستے نے شہید کی میت کو سلامی پیش کی ۔تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے ضلع مستونگ میں خودکش حملے کے نتیجے میں بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار نوابزادہ سراج رئیسانی سمیت 131 سے زائد افراد کی شہادت کے بعد صوبے کی فضا سوگوار ہے اور حکومت بلوچستان کی جانب سے سانحہ مستونگ پر 2 روزہ سوگ کے اعلان پر تمام سرکاری عمارات پر قومی پرچم سرنگوں رہا۔دوسری طرف ملک میں ہونے والے حالیہ دہشت گردی کے واقعات کے بعد نگران وزیراعظم ناصر الملک نے آج بروز اتوار سرکاری طور پر ایک روزہ سوگ کا اعلان کردیا۔یوم سوگ کا اعلان بلوچستان اور خیبرپختونخوا کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لیے کیا گیا۔وزیراعظم آفس کی جانب سے ہدایات ملنے پر وزارت داخلہ نے نوٹیفکیشن جاری کردیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سمیت دیگر عسکری حکام نے سراج رئیسانی کی نماز جنازہ میں شرکت کی۔جنرل قمر جاوید باجوہ نے سی ایم ایچ کوئٹہ میں دھماکے کے زخمیوں کی عیادت بھی کی ۔مستونگ خودکش حملے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ،لیویز تھانہ درینگڑھ میں درج مقدمے میں قتل ،اقدام قتل ،دہشت گردی سمیت دیگر دفعات شامل کی گئی ہیں۔بلوچستان کی نگران حکومت نے شہد اء کے لواحقین کیلئے 15،15لاکھ ،شدید زخمیوں کیلئے 10 ،10لاکھ جبکہ معمولی زخمیوں کیلئے 2،2لاکھ روپے امداد کا اعلان کیاہے ،نگران وزیراعلی بلوچستان علاؤالدین مری نے شہد اکے خاندان کے ہر فرد کو سرکاری ملازمت دینے کا بھی اعلان کیا۔مستونگ دھماکے میں شہید ہونیوالے سراج رئیسانی کے بھائی لشکری رئیسانی نے واقعے پر ’ٹرتھ کمیشن‘ بنانے کا مطالبہ کردیا۔میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے لشکری رئیسانی نے کہا کہ گزشتہ روز کے واقعے کے جوابدہ وہ ہیں جنہوں نے ملک کی پالیسیاں بنائیں۔انہوں نے کہا کہ اگر اس واقعے پر سنجیدہ ہیں تو ٹرتھ کمیشن بنایا جائے ۔دوسری جانب نوابزادہ سراج رئیسانی کی رہائش گاہ ساراوان ہاؤس میں لوگوں کی بڑی تعداد کی آمد کا سلسلہ جاری ہے جہاں اسلم رئیسانی اور نوابزادہ لشکری رئیسانی سمیت دیگرعمائدین موجود ہیں۔ آئی جی ایف سی میجرجنرل ندیم انجم اور کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ بھی ساراوان ہاؤس پہنچے جہاں انہوں نے اسلم رئیسانی، لشکری رئیسانی سیسانحہ مستونگ پراظہار افسوس کیا۔سانحہ مستونگ پرسپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی کال پر پاکستان بھر کے وکلاء نے ہڑتال کی ، پاکستان بار کونسل کی جانب سے سانحہ مستونگ اور بنوں کی مذمت کرتے ہوئے 2 دن کے سوگ اور ایک دن کی ہڑتال کا اعلان کیا گیا ہے۔وائس چیئرمین پاکستان بار کونسل کامران مرتضیٰ کے مطابق آج ملک بھر میں عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کیا جائے گا۔کامران مرتضی نے واقعات میں ملوث افراد کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے دہشت گردی کے ان واقعات کی شدید مذمت کی۔علاوہ ازیں ملک کی دیگر بار کونسلز نے بھی مستونگ حملے کی مذمت کرتے ہوئے ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔سکیورٹی اداروں نے سانحہ مستونگ کے مبینہ خود کش حملہ آور کے 2 سہولت کار گرفتار کرلئے ہیں۔نجی ٹی وی نے ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے سانحہ مستونگ کے مبینہ خود کش حملہ آور کے 2 سہولت کاروں کو گرفتار کرلیا ہے۔خود کش حملہ آور دھماکے سے 2روز قبل افغانستان سے چاغی پہنچا ،جہاں سہولت کاروں نے اسے اپنے پاس ٹھہرایا ۔ذرائع کے مطابق سراج رئیسانی کے جلسے میں مبینہ دہشت گرد پہلی صف میں بیٹھا تھا ،سہولت کاروں سے اس حوالے تفتیش جاری ہے۔

سانحہ مستونگ

راولپنڈی (صباح نیوز)آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کوئٹہ کا دورہ، شہید سراج رئیسانی کو "سولجر آف پاکستان" قرار دے دیا، شہید کی نماز جنازہ میں بھی شرکت کی۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے شہید سراج رئیسانی کو "سولجر آف پاکستان" قرار دے دیا۔ آرمی چیف شہید رہنما کے گھر گئے اور ورثا سے بھی تعزیت کی، اس موقع پر آرمی چیف نے کہا کہ ہم نے ایک بہادر اور محب وطن پاکستانی کھو دیا۔ سراج رئیسانی کی جرات اور پاکستان کے لیے خدمات پر انہیں ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ ان کی تین نسلوں نے پاکستان کے لیے قربانی دی ہے۔انہوں نے کہا کہ بطور قوم انتہا پسندی اور دہشتگردی کے چیلنج کے خلاف کھڑے ہیں اور دشمن کو ہر قیمت پر شکست دیں گے۔ مستقل امن کی منزل کے قریب پہنچ چکے ہیں۔

جنرل باجوہ

واشنگٹن،اسلام آباد (اظہر زمان،این این آئی)بلوچستان کے علاقے مستونگ میں ہونیوالے دھماکے کی عالمی برادری نے شدید مذمت کرتے ہوئے دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان کو اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا ہے۔امریکہ کا کہنا ہے کہ پاکستانی انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں اور ان کے حامیوں پر ہونے والے تازہ حملے پاکستانی عوام کو ان کے جمہوری حقوق سے محروم کرنے کی بزدلانہ کوششیں ہیں۔ امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان ہیدر نوئرٹ نے مستونگ اور بنوں میں ہونے والے دہشت گرد حملوں پر اپنے رد عمل میں ان کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ہم ہلاک ہونے والے افراد کے لواحقین کے غم میں برابر کے شریک ہیں اور زخمی ہونے والے افراد کی جلد صحت یابی کے لئے دعا گو ہیں۔ انوں نے کہا کہ بلوچستان اور خیبر پختونخوا کے صوبوں کے شہروں مستونگ اور بنوں میں ہونے والی حملے کی یہ وارداتیں بہت افسوسناک ہیں۔ امریکی ترجمان نے مزید کہا کہ امریکہ دہشتگردی کے خلاف جنگ میں تمام تر جنوبی ایشیا اور پاکستان کے عوام کے ساتھ بدستور کھڑا رہے گا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے صدر ممنون حسین سے اپنے تعزیتی پیغام میں مستونگ دھماکے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب اس مجرمانہ حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتا ہے ،سعودی حکومت اور عوام کو شہداء کے لواحقین اور تمام پاکستانی عوام سے دلی ہمدردی ہے۔شاہ سلمان نے تعزیتی پیغام میں کہا کہ سعودی حکومت اور عوام اس مصیبت کی گھڑی میں پاکستان کیساتھ ہیں اور پاکستان اور پاکستانی عوام کی حفاظت کیلئے اللہ تعالیٰ سے دعاگو ہیں۔سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے بھی صدر ممنون حسین کو سانحہ مستونگ پر تعزیتی پیغام بھیجا ہے۔جرمن چانسلر اینجلا مرکل نے نگران وزیراعظم ناصرالملک کے نام تعزیتی پیغام میں مستونگ خودکش حملے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بلوچستان میں انتخابی مہم میں دہشت گرد حملے پر شدید دکھ ہوا اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں۔امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ حملے پاکستانی عوام کوجمہوری حقوق سے محروم کرنے کی کوشش ہے۔ یورپی یونین نے مستونگ میں انتخابی جلسے میں خودکش دھماکے میں انسانی جانوں کے ضیاع کی مذمت کرتے ہوئے دھماکے میں جاں بحق افراد کے اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔یورپی یونین نے کہا ہے کہ حالیہ حملوں کی مکمل تفتیش کی اشد ضرورت ہے اور توقع ہے پاکستانی حکام انتخابی سرگرمیوں کی سیکیورٹی یقینی بنائیں گے۔پاکستان میں تعینات برطانوی ہائی کمشنر تھامس ڈریو نے اپنے ایک بیان میں متاثرہ خاندانوں سے اظہار ہمدردی کرتے ہوئے کہا کہ کسی کو بھی جمہوری عمل میں رکاوٹ ڈالنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔قطری وزارت خارجہ نے مستونگ میں خود کش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے پاکستان اور شہید ہونیوالوں کے اہل خانہ سے اظہار تعزیت کیاہے۔

مزید : صفحہ اول