اسحق ڈار کے ریڈ وارنٹ جاری ، گرفتاری کیلئے انٹر پول کو درخواست

اسحق ڈار کے ریڈ وارنٹ جاری ، گرفتاری کیلئے انٹر پول کو درخواست

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) ایف آئی اے نے سابق وزیر خزانہ اسحق ڈار کے ریڈ وارنٹ جاری کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کیلئے انٹرپول کو درخواست دیدی۔پاناما کیس کے فیصلے کی روشنی میں نیب نے اسحق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں کا ریفرنس احتساب عدالت میں دائر کیا جس میں انہیں مفرور قرار دیا جاچکا ہے۔سپریم کورٹ میں چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اسحاق ڈار کی وطن واپسی سے متعلق کیس کی سماعت کی جس سلسلے میں اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے۔اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ اسحاق ڈار کے ریڈ وارنٹ جاری کر دیئے گئے ہیں، وزارت داخلہ کی منظوری کے بعد ایف آئی اے نے ریڈ وارنٹ جاری کیے،چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ کیا اسحاق ڈار کا پاسپورٹ منسوخ کیا گیا ہے؟ اٹارنی جنرل نے بتایا کہ پاسپورٹ منسوخی کا آپشن زیر غور آیا تھا۔ پاسپورٹ منسوخ کیا تو واپس نہ آنے کا جواز بن جائے گا۔دوران سماعت وزارت داخلہ کی جانب سے اسحاق ڈار کی واپسی سے متعلق جواب بھی سپریم کورٹ میں جمع کرایا گیا۔جسٹس سردار طارق نے اٹارنی جنرل نے استفسار کیا کہ اسحاق ڈار کی بیرون ملک جائیداد ضبط کرنے کے حوالے سے کیا کیا؟ اس پر انہوں نے بتایا کہ جائیداد ضبطگی کی درخواست بھی ریڈ وارنٹ کے ساتھ لگا دی ہے۔سپریم کورٹ نے اسحاق ڈار کی واپسی سے متعلق کیس میں آئندہ سماعت پر پیش رفت رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت 2 ہفتے کیلئے ملتوی کر دی۔

سپریم کورٹ ،ریڈ وارنٹ

اسلام آباد(آئی این پی ) مسلم لیگ (ن)کے رہنماسابق وفاقی وزیر خزانہ اسحق ڈار نے چیئرمین پاکستان ٹیلیویژن عطا الحق قاسمی سے اپنے تعلق کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرا چیئرمین پی ٹی وی کی تقرری سے کوئی تعلق نہیں، عطا الحق قاسمی کیلئے لاکھوں روپے تنخواہ مقررکرنے والوں سے جواب طلب کیا جائے، بیماری کے باعث سپریم کورٹ میں پیش ہونے سے قاصر ہوں۔ تفصیلات کے مطابق اسحق ڈار نے عدالت عظمی کو بذریعہ ای میل مطلع کیا ہے کہ ان کا چیئرمین پی ٹی وی کی تقرری سے کوئی تعلق نہیں ۔اسحق ڈار کی جانب سے رجسٹرار سپریم کورٹ کو ارسال ای میل میں موقف اختیار کیا گیا کہ بیماری کے باعث سپریم کورٹ میں پیش ہونے سے قاصر ہوں۔

اسحق ڈار

مزید : کراچی صفحہ اول