بٹ خیلہ ،پی ٹی آئی اور پی پی پی جھنڈے اتارنے پر تنازعہ ،ہاتھا پائی

بٹ خیلہ ،پی ٹی آئی اور پی پی پی جھنڈے اتارنے پر تنازعہ ،ہاتھا پائی

بٹ خیلہ (بیورورپورٹ )تحریک انصاف اور پیپلزپارٹی کے کارکن جھنڈے لگانے اور ایک دوسرے کے جھنڈے اتارنے پر آپس میں الجھ پڑے، تحریک انصاف کے کارکن کو چھری سے زخمی کردیا، تھانہ درگئی میں دونوں پارٹیوں کے صوبائی امیدوار پہنچ گئے تاہم صلح کے بغیر بات کراس ایف آئی آر تک پہنچ گئی،انصاف لیبر ونگ کے تحصیل صدر حاجی امیر خان نے پریس کانفرنس میں سابقہ ایم پی اے پر تھانہ کے اندر ملاکنڈ لیویز کے سامنے تحریک انصاف کے ورکروں پر دھونس دباؤ کاالزام لگا دیا، ملزم کی عدم گرفتاری کے خلاف احتجاج بھی کیا۔تفصیلات کے مطابق لیویز تھانہ درگئی کے رپورٹ کے مطابق حسین احمد ولد احمد خان سکنہ باجوڑ حال جبن نے بلاول بھٹو زرداری کے آمد پر پیپلزپارٹی کے جھنڈے لگا نے پرتحریک انصاف کے کارکن زیب خان ولد شاہ جہان سکنہ جبن کے ساتھ ان کی تلخ کلامی ہوئی اور مبینہ طور پر چھری یا پیچ کس کے وار تک بات پہنچ گئی جس سے زیب خان زخمی ہو کر ہسپتال لے جایا گیا ۔ واقعہ کے بعد تحریک انصاف کے صوبائی امیدوار پیر مصور خان غازی اور پیپلزپارٹی کے صوبائی امیدوار اور سابق ایم پی اے سید محمد علی شاہ باچا اپنے اپنے بہت سے کارکنوں کے ہمراہ تھانہ درگئی پہنچ گئے۔ تاہم زخمی زیب خان کے بروقت صلح سے انکار پر اور ملزم کی عدم گرفتاری پر انصاف لیبر ونگ کے تحصیل صدرحاجی امیر خان ، زیب خان ، عمر خان اور دیگر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہاکہ ملاکنڈ لیویز سابق ایم پی اے کی غلام بن چکے ہیں،تھانہ کے اندر تحریک انصاف کے ورکروں کو جھاڑ پلاتی رہی، غصہ ہوتا رہا لیکن سارے تھانے والے چپ رہے۔ہمارے بندے کو زخمی کیا، ہسپتال رپورٹ بھی آئی لیکن سابق ایم پی اے کی وجہ سے ملزم کو گرفتار نہیں کیاگیا۔جس پر انہوں نے ڈی سی ملاکنڈ، چیف الیکشن کمشنر اور چیف جسٹس سے اصلاح احوال اور ایکشن لینے کا مطالبہ کردیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر