آزاد کشمیر بھر میں پانی کا بحران شدت اختیار کرنے لگا

آزاد کشمیر بھر میں پانی کا بحران شدت اختیار کرنے لگا

مظفرآباد(بیورورپورٹ)آزاد کشمیر بھر میں پانی کا بحران شدت اختیار کرنے لگا۔پانی کی کمی اور واٹر سپلائی سکیموں میں توڑ پھوڑ سے آئے روز جھگڑے معمول بن گئے۔حکومت واٹر سورلز کو اپنی تحویل میں لے تاکہ پانی کی سپلائی میں کسی کو اعتراض نہ ہو اور رکاؤٹیں ڈالنے کی جوازیت بھی ختم ہو سکے۔آزاد حکومت کابینہ اسمبلی کے اجلاس میں جملہ واٹر سورسز کو حکومتی تحویل میں لینے اور لوگوں کی اراضی سے پائپ لائن گزارنے کے عمل کو بھی قانونی دائرے میں لائے عوامی مطالبہ۔تفصیلات کے مطابق آزاد کشمیر بھر میں پانی کا مسئلہ دن بدن شدت اختیار کرتا چلا جا رہا ہے۔جہاں سورس ختم ہو رہے ہیں اور واٹر سپلائی سکیمیں خشک ہونے کے ساتھ ساتھ ناکارہ ہو رہی ہیں۔وہاں ایسے چشمہ کو کسی مالک واراضی کی تحویل میں ہیں وہاں سے پانی سپلائی کرنے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ارباب اختیار نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ چھوٹے بڑے واٹر سورسز کو سرکاری تحویل میں لیا جائے اور اسے عام آدمی کیلئے فائدہ پہنچانے میں کردار ادا کیا جائے۔ساتھ ساتھ جن راستے سے پانی کے پائپ گزرتے ہیں اس کو بھی قانونی حیثیت دی جائے تاکہ کوئی کسی کی واٹر سپلائی سکیم میں توڑ پھوڑ نہ کر سکے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر