آئینی اداروں میں سیاسی وابستگی پرتعیناتیاں قابل مذمت ہیں،قاضی محمود

آئینی اداروں میں سیاسی وابستگی پرتعیناتیاں قابل مذمت ہیں،قاضی محمود

مظفراباد(سٹی رپورٹر)آئینی اداروں میں اہلیت کی بجائے خاندانی یا سیاسی وابستگی کی بنیاد پر تعیناتیاں انتہائی قابل مذمت ہیں ۔حکومت کو میرٹ سے ہٹ کر اعلیٰ عدلیہ اور اسلامی نظریتی کونسل کی تشکیل قوم کے ساتھ سنگین مذاق ہے ۔وزیر اعظم آزاد کشمیر اور حکومت آزاد کشمیر کو اپنے منشور اور اتحادیوں کے ساتھ کیے گئے معائدات کو پس پشت نہیں ڈالنا چاہیے۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم افسوسناک ہیں ۔پاکستان کے آمدہ انتخابات میں عوام نظریہ اسلام اور نظریہ پاکستان کے تحفظ کو منشور کا حصہ بنانے والوں کو کامیاب کریں ۔آزاد کشمیر کے بجٹ میں ترقیاتی اور غیر ترقیاتی تفاوت کو ختم کیا جائے ۔ان خیالات کا آظہار آل جموں کشمیر جے یو آئی کے امیر مولانا قاضی محمود الحسن اشرف نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انھوں نے کہا تحریک آزادی کشمیر میں میر واعظ کشمیر مولانا یوسف شاہ اور شہداء1931کا کردار قوم کے لیے مشعل راہ ہے ۔میر واعظ کشمیر نے تحریک آزادی کشمیر کے لیے اپنا سب کچھ قربان کیا ۔اور آزادی کے لیے ہمت اور جرت کے ساتھ مصلحتوں کا شکار ہوئے بغیر جدوجہد کا درس دیا ہے ۔جے یو آئی اس وقت میر واعظ کشمیر کے مشن کی حقیقی وارث ہے۔انھوں نے کہا جے یو آئی خدا کی زمین پر خدا نظام لانا چاہتی ہے ۔اسی نظام کی یقین دہانی پر گزشتہ انتخابات میں مسلم لیگ ن کے ساتھ ایک معائدہ کی روشنی میں تعاون کیا تھا ۔اگر حکومت نے اس پر سنجیدگی سے عمل نہ کیا تو حکومت کو مسائل کا سامنا کرنا پڑھے گا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر