13جولائی 1931تحریک آزادی کشمیرکا نقطہ آغاز تھا ،سردارمختار

13جولائی 1931تحریک آزادی کشمیرکا نقطہ آغاز تھا ،سردارمختار

مظفرآباد(سٹی رپورٹر)آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے رہنماء وممبر کشمیر کونسل سردار مختار احمد عباسی نے یوم شہداء جموں کے موقع پر اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں کہا کہ 13جولائی 1931تحریک آزادی کشمیرکا نقطہ آغاز تھا جب 22نوجوانوں نے آذان کی تکمیل کیلئے ڈوگرہ افواج کی گولیوں کے نشانہ بنے ۔مقبوضہ کشمیرمیں مسلمان آج بھی بھارتی تسلط کے خلاف جانوں کا نذرانہ پیش کررہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیرمیں لاکھوں مسلمان اپنے سروں کی فصلیں کٹوا کر آزادی کے چراغوں کو ایندھن فراہم کرکے یہ ثابت کردیا ہے کہ وہ اقوام متحدہ میں تسلیم شدہ اپنے حق خودارادیت کے حصول تک اپنا منظم مشن جاری رکھیں گے ۔انہوں نے کہا کہ جب تک مسئلہ کشمیراقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل نہیں ہوجاتا کشمیریوں کی جدوجہد جاری و ساری رہے گی۔انہوں نے تحریک آزادی کشمیرکے شہداء کو زبر دست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیااور اس عزم کا اعادہ کیا کہ شہدائے کشمیرکا خون کسی صورت رائیگان نہیں ہونے دیا جائیگا۔انہوں نے مزید کہا کہ 13جولائی کا دن پوری دنیا کے مسلمانوں کیلئے بیداری کا دن ہے ۔ اس دن تمام مسلمانوں کو بھارتی جارحیت کا نوٹس لینا چاہیے اور کشمیر یوں سے یکجہتی کیلئے گھروں سے نکل کر بھرپور احتجاج کرنا چاہیے ۔ قومی ایام کے حوالہ سے لوگوں کو آگاہی فراہم کرنی چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ تکمیل پاکستان کی اس عظیم جدوجہد کیلئے کشمیرآج بھی مقبوضہ کشمیرمیں بھارت کی 8لاکھ افواج کے سامنے سینہ سپر ہیں ۔سرینگر میں سبز ہلالی پرچم لہرائے جارہے ہیں اور کشمیری پاکستان کے پرچم میں دفن ہونا اپنے لیے اعزاز سمجھتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ اب وہ دن دور نہیں جب مقبوضہ کشمیرکے بھائی بھارتی تسلط سے آزادہو کرہمارے ساتھ ہوں گے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر