قبرستان کے قریب ماہرین کو 2ہزار سال پرانا کمرہ مل گیا ، یہاں پر مردوں کے ساتھ کیا کیا جاتا تھا؟ جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہوجائیں گے

قبرستان کے قریب ماہرین کو 2ہزار سال پرانا کمرہ مل گیا ، یہاں پر مردوں کے ساتھ ...
قبرستان کے قریب ماہرین کو 2ہزار سال پرانا کمرہ مل گیا ، یہاں پر مردوں کے ساتھ کیا کیا جاتا تھا؟ جان کر آپ کے بھی رونگٹے کھڑے ہوجائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

قاہرہ(مانیٹرنگ ڈیسک) مصر سے اب تک ممیاں (حنوط شدہ لاشیں) اور دیگر ہزاروں سال قدیم اشیاء دریافت ہوتی آئی ہیں لیکن اب ماہرین نے ایک فیکٹری دریافت کر لی ہے جہاں ایسی چیز تیار کی جاتی تھی کہ سن کر آپ کی حیرت گم ہو جائے گی۔ ڈیلی سٹار کے مطابق ماہرین نے اس فیکٹری کے بارے میں بتایا ہے کہ اس میں انتقال کرجانے والے امراء کی لاشوں کو حنوط کرکے انہیں ممی میں تبدیل کیا جاتا تھا۔ یہ فیکٹری 2ہزار سال سے زیادہ قدیم ہے اور ماہرین کا ماننا ہے کہ ممکنہ طور پر اس کا تعلق 664قبل مسیح سے 404قبل مسیح کے سیٹ پرسین (Saite-Persian)دور سے ہو سکتا ہے۔اس فیکٹری سے 35ممیاں اور پتھر سے بنائے گئے مزین تابوت بھی دریافت ہوئے ہیں۔

اس فیکٹری کی دریافت کرنے والے مصری جرمن مشن کے سربراہ رمضان بدری حسین کا کہنا ہے کہ ’’اس ورکشاپ کی دریافت سے ہمیں ان کیمیائی تراکیب کے بارے میں مزید اہم معلومات ملیں گی جنہیں قدیم مصر کے لیے لاشوں کر لگا کر انہیں ممی بنایا کرتے تھے۔ہم جانتے ہیں کہ وہ لوگ مختلف اقسام کے تیل خاص کیمیائی ترکیب سے باہم ملا کرکیمیائی آمیزہ بناتے تھے اور اس سے لاشیں محفوظ کرتے تھے۔ اس دریافت سے ہمیں حتمی طور پر معلوم ہو سکے گا کہ وہ تیل کن اقسام کے تھے اور انہیں کس ترکیب سے ملایا جاتا تھا۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس