خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی، پھر اسے زندہ جلا دیا گیا اور اس کی۔۔۔ ایسا خوفناک واقعہ جس کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی

خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی، پھر اسے زندہ جلا دیا گیا اور اس کی۔۔۔ ایسا ...
خاتون کے ساتھ اجتماعی زیادتی، پھر اسے زندہ جلا دیا گیا اور اس کی۔۔۔ ایسا خوفناک واقعہ جس کی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کو خواتین کے تحفظ کے حوالے سے دنیا کا بدترین ملک قرار دیا گیا ہے جہاں آئے روز جنسی زیادتی کے ایسے واقعات رونما ہوتے رہتے ہیں کہ انسانیت لرز کر رہ جاتی ہے۔ اب ایسا ہی مزید ایک واقعہ ریاست اترپردیش کے ضلع سمبھل میں واقع ایک گاؤں میں پیش آ گیا ہے جہاں 5درندہ صفت ملزمان نے ایک خاتون کو اس کے گھر میں گھس کر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر قریبی مندر میں لیجا کر اسے زندہ جلا کر مارڈالا۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق 35سالہ خاتون، جو دو بچوں کی ماں تھی، کا شوہر غازی آباد میں محنت مزدوری کرتا تھا اور وہ گھر میں اکیلی رہتی تھی۔ واقعے کی رات اڑھائی بجے کے قریب اسی گاؤں کے پانچ شیطان اس کے گھر میں گھس آئے اور اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔

خاتون کے شوہر نے پولیس کو بتایا کہ ’’ملزمان کے جانے کے بعد میری بیوی نے اپنے ایک کزن کوفون کرکے تمام واقعے کے متعلق بتایا اور ملزمان کے نام بھی بتائے۔ وہ مجھے اور میرے بھائی کو فون نہ کر سکی کیونکہ ہمارے فون بند تھے۔ اس نے پولیس ہیلپ لائن100پر بھی کال کی لیکن وہاں سے فون نہیں اٹھایا گیا۔ اتنی دیر میں ملزمان دوبارہ واپس آئے اور میری بیوی کو گھسیٹتے ہوئے قریبی مندر میں لے گئے اوروہاں اس پر مٹی کا تیل چھڑک کر آگ لگا دی۔‘‘ پولیس کا کہنا ہے کہ ’’ہم نے خاتون کی اپنے کزن کو کی گئی آخری کال کی آڈیو ریکارڈنگ حاصل کر لی ہے جس میں اس نے ملزمان کے نام آرام سنگھ، مہاویر، چرن سنگھ، گلو اور کمارپال بتائے ہیں۔ ان کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے اورگرفتاری کے لیے دو ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس