انصاف کی جنگ لڑنے میں تاخیر نہیں کی،ڈاکٹر طاہر القادری

انصاف کی جنگ لڑنے میں تاخیر نہیں کی،ڈاکٹر طاہر القادری

  

لاہور(جنرل رپورٹر)قائد تحریک منہاج القرآن ڈاکٹر محمد طاہر القادری نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کے112 اسیران کی ضمانت پر رہائی کے بعد ان سے آن لائن گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے انصاف کی جدوجہد میں ایک لمحہ تاخیر نہیں کی،ہمارے بس میں جنگ لڑنا ہے مگر فیصلہ کرنا کسی اور کے بس میں ہے، میں اپنے عظیم کارکنان سے کہوں گا چہرے بدل گئے ہیں مگر ہمارا دشمن نہیں بدلا اسی لئے آج بھی مشکلات،رکاوٹوں اور پریشانیوں میں کوئی کمی نہیں آ رہی۔ یہ نظام ہلاکو خان ہے جوپاکستان اور اسکے غریب عوام کو ہلاک کرتا چلا جا رہا ہے۔ یہ نظام غریب کا دشمن ہے،ایمانداری کا دشمن ہے،کردار اور دیانتداری کا دشمن ہے۔ اس نظام کی وجہ سے کمزور کو جلدی انصاف نہیں ملتا ہم نے پاکستان کے چوٹی کے وکلاء کے ذریعے انصاف کی جدوجہد کی۔ وکلاء نے انصاف کی جنگ لڑنے کا حق ادا کیا مگر یہ نظام انصاف کے راستے کا بھاری پتھر ہے۔ انہو ں نے فرداً فرداً تمام رہائی پانیوالے اسیران کا نام لے کر انکی عظیم قربانی پر انہیں خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ آپ میرے دل کا سرور میری آنکھوں کو نور ہیں،کارکنان نا حق جیلوں میں تھے مگر کوئی دن ایسا نہیں کہ میں نے اپنے عظیم کارکنان کیلئے دعا نہ کی ہو۔ انہوں نے حصول انصاف کی جدوجہد میں شاندار انداز میں قانونی جنگ لڑنے پر مخدوم مجید حسین شاہ ایڈووکیٹ،محرم علی بالی ایڈووکیٹ،نعیم الدین چوہدری ایڈووکیٹ،شکیل ایڈووکیٹ کو خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹا ون کیس کی کچھ اپیلیں لاہورہائیکورٹ اور سپریم کورٹ میں ہیں وہاں پاکستان کے مایہ ناز وکیل بیرسٹر علی ظفر ایڈووکیٹ،ڈاکٹر خالد رانجھا ایڈووکیٹ،جسٹس(ر) اقبال احمد سدھو ایڈووکیٹ،اظہر صدیق ایڈووکیٹ انصاف کی جنگ لڑ رہے ہیں۔ حصول انصاف کیلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کریں گے۔ ہم پر امید ہیں کہ بلا آخر سانحہ ماڈل ٹا ون کے منصوبہ ساز عبرت ناک انجام سے دوچار ہونگے اور مظلوم فتح یاب ہونگے۔

طاہر القادری

مزید :

صفحہ آخر -