نیب ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس، شریف برادران، سرتاج عزیز، احد خان چیمہ کیخلاف نئے کیسوں میں تحقیقات کی منظوری

    نیب ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس، شریف برادران، سرتاج عزیز، احد خان چیمہ ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کا اجلاس قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں ڈپٹی چیئرمین نیب، پراسیکیوٹر جنرل اکاؤنٹیبلٹی نیب، ڈی جی آپریشن نیب اور دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔ نیب کی یہ دیرینہ پالیسی ہے کہ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس کے بارے میں تفصیلات عوام کو فراہم کی جائیں جو طریقہ گزشتہ کئی سالوں سے رائج ہے جس کا مقصد کسی کی دل آزاری مقصود نہیں۔ تمام انکوائریاں اور انوسٹی گیشنز مبینہ الزامات کی بنیاد پر شروع کی گئی ہیں جو کہ حتمی نہیں۔ نیب قانون کے مطابق تمام متعلقہ افراد سے بھی ان کا موقف معلوم کرنے کے بعد مزید کاروائی کرنے یا نہ کرنے کا فیصلہ کرتا ہے۔قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں سی ای او میسرز ای آر پی ایل ارشد وحید ا ور دیگر کے خلاف بدعنوانی کا ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دی گئی۔ ملزمان پر مبینہ طورپر اختیارات کا ناجائز استعمال کرنے کا الزام ہے۔ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں سابق وزیراعظم نواز شریف اور دیگر کے خلاف انوسٹی گیشن کی منظوری دی گئی۔ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں میاں محمد شہباز شریف، سابق وزیراعلیٰ پنجاب، سرتاج عزیز سابق سینیٹر، رانا محمد اقبال خان سابق ڈی آئی جی ٹریفک پولیس پنجاب اور دیگر، مہر حامد رشید رکن صوبائی اسمبلی پنجاب، مہر عبدالروف، ہیون ویلاز فیصل آباد کے مالکان/ ڈویلپر انتظامیہ اور دیگر، عتیق الرحمان، شیخ اعجاز احمد سابق ایم پی اے اور دیگر اور یونیورسٹی آف پنجاب کے پی ایچ ڈی ڈیفالٹنگ سکالرز کے خلاف انکوائریز کی منظوری دی گئی۔ قومی احتساب بیورو کے ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں میاں محمد شہباز شریف سابق وزیراعلیٰ پنجاب، جاوید محمود سابق سیکرٹری ٹو وزیراعلیٰ پنجاب، احد خان چیمہ، سابق ڈی جی ایل ڈی اے اور دیگر کے خلاف انوسٹی گیشنز جبکہ ایف آئی ای ڈی ایم سی انوائرنمنٹ مینجمنٹ کمپنی فیصل آباد کی انتظامیہ /افسران/اہلکاران اور دیگر، پنجاب انڈسٹریل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ اور مینجمنٹ کمپنی کی انتظامیہ/افسران/اہلکاران اور دیگر، لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کی انتظامیہ/افسران/اہلکاران اور دیگر، پنجاب میونسپل ڈویلپمنٹ فنڈ کمپنی کی انتظامیہ/ افسران/اہلکاران اور دیگر، گوجرانوالہ ویسٹ مینجمنٹ کمپنی کی انتظامیہ افسران/اہلکاران اور دیگر کے خلاف انکوائریز اب تک عدم شواہد کی بیناد پر قانون کے مطابق بند کرنے کی منظوری دی گئی۔ قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس جاوید اقبال نے کہا کہ ملک سے بدعنوانی کے خاتمہ اور کرپشن فری پاکستان کے لئے نیب سنجیدہ کوششیں کر رہا ہے اور نیب کی اولین ترجیح میگا کرپشن کے مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانا ہے۔ نیب نے احتساب سب کیلئے کی پالیسی کے تحت 466ارب روپے بلواسطہ اور بلاواسطہ طورپر بدعنوان عناصر سے برآمد کرکے قومی خزانے میں جمع کروائے جو ایک ریکارڈ کامیابی ہے۔ نیب کی کارکردگی کو معتبر قومی اور بین الاقوامی اداروں نے سراہا ہے جو نیب کے لئے اعزاز کی بات ہے۔ نیب کے تعلق کسی سیاسی جماعت، گروہ اورفرد سے نہیں بلکہ صرف اور صرف ریاست پاکستان سے ہے۔ نیب قانون کے مطابق بدعنوان عناصر سے قوم کی لوٹی گئی دولت برآمد کرنے کے لئے ہر ممکن وسائل بروئے کار لا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مفرور اور اشتہاری ملزمان کی گرفتاری کے لئے قانون کے مطابق اقدامات اٹھائے جائیں گے تاکہ بدعنوان عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جا سکے جہاں قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔ چیئرمین نیب نے نیب کے تمام ڈائریکٹر جنرلز کو ہدایت کی کہ شکایات کی جانچ پڑتال، انکوائریاں اور انوسٹی گیشنز مقررہ وقت کے اندر قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچائی جائیں اور تمام انوسٹی گیشن آفیسرز اور پراسیکیوٹرز پوری تیاری، ٹھوس شواہد اور قانون کے مطابق معزز عدالتوں میں نیب کے مقدمات کی پیروی کریں تاکہ بدعنوان عناصر کو قانون کے مطابق سزا دلوائی جا سکے۔

نیب اجلاس

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) توشہ خانہ ریفرنس میں نیب نے نواز شریف کی طلبی کا اشتہار لندن میں ایون فیلڈ اپارٹمنٹس پر لگانے کا فیصلہ کر لیا۔نیب نے ایون فیلڈ اپارٹمنٹ میں نوازشریف طلبی کا اشتہار لگانے کے لیے وزارت خارجہ سے رابطہ کر لیا جس میں نواز کی طلبی کا اشتہار برطانوی رہائشگاہ کے باہر بھی لگانے کی ہدایت کر دی۔وزارت خارجہ کے ڈپٹی ڈائریکٹر یورپ نے پاکستانی سفارت خانے سے رابطہ کر کے عدالتی احکامات پر عمدارآمد کرانے کی ہدایت کی ہے، نیب ذرائع کے مطابق پاکستانی ہائی کمیشن یوکے کے اہلکار آج ایون فیلڈ جائیں گے اور 16،16A اور 17,17A ایون فیلڈ میں اشتہار لگائیں گے۔ دوسری طرف احتساب عدالت نے پارک لین ریفرنس میں آصف زرداری کے وکیل کو آئندہ سماعت پر دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کردی۔ ہریش کمپنی کو ٹھٹھہ واٹر سپلائی کا ٹھیکہ دینے سے متعلق ریفرنس میں سابق صدر آصف علی زرداری سمیت تمام ملزمان پر 4 اگست کو فرد جرم عائد کی جائے گی۔ وکیل فارق ایچ نائیک نے موقف اختیار کیا کہ نیب دستاویزات کے مطابق معاملہ دو کمپنیوں پارتھینن اور پارک لین کا ہے، ول فل ڈیفالٹ آصف علی زرداری نہیں بلکہ پارتھینون کمپنی نے کیا ہے، قانون کے مطابق پبلک آفس ہولڈر کو گورنر سٹیٹ بینک کی جانب سے سات دن کا نوٹس نہیں دیا گیا، عدالت کو سمجھنا ہوگا کہ کیا نیب قانون کے مطابق سابق صدر کے خلاف کارروائی کرسکتا ہے؟ جج احتساب عدالت نے ریمارکس دیئے کہ اس معاملے کو دیکھیں گے کہ کمپنی اصل تھی یا نہیں؟۔نیب پراسیکیوٹر نے دلائل میں کہا کہ پارتھینن کمپنی نے پہلے کبھی کاروبار کیا نہ اس کے بعد، کمپنی صرف ایک قرض لینے کے لئے نمودار ہوئی، کمپنی کا اپنا دفتر بھی موجود نہیں، ایڈ ریس پارک لین کے دفتر کا دے رکھا ہے۔ فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ آپ کو اس پر کیا پریشانی ہے؟ نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ پریشانی یہ ہے کہ یہ پیسے بعد میں فالودے والے کے اکاؤنٹس میں ملتے ہیں۔ عدالت نے فارق ایچ نائیک کو ا?ئندہ سماعت پر دلائل مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت 21 جولائی تک ملتوی کر دی۔دوسری جانب ہریش کمپنی کو ٹھٹھہ واٹر سپلائی کا ٹھیکہ دینے سے متعلق ریفرنس میں سابق صدر آصف علی زرداری سمیت تمام ملزمان پر 4 اگست کو فرد جرم عائد کی جائے گی۔ ریفرنس کے مطابق، ٹھٹھہ واٹر سپلائی کے غیر قانونی ٹھیکے دئیے گئے جس کے نتیجے میں رقم جعلی اکاؤنٹس کے ذریعے ندیم بھٹو کے اکاؤنٹس میں آتی رہی اور اس سے وہ نوڈیرو ہاؤس کا انتظام چلاتے رہے۔

توشہ خانہ ریفرنس

مزید :

صفحہ اول -