مندر کی تعمیر کیخلاف درخواست، ہائیکورٹ کی پٹیشنر کو تیاری کر کے آنے کی ہدایت

  مندر کی تعمیر کیخلاف درخواست، ہائیکورٹ کی پٹیشنر کو تیاری کر کے آنے کی ...

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) اسلام آباد ہائی کورٹ نے مندر کی تعمیر کے خلاف درخواست پرآئندہ سماعت پر پٹیشنر کو تیاری کرکے آنے کی ہدایت کی۔ منگل کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے سماعت کی۔چوہدری تنویر اختر ایڈووکیٹ نے دلائل دیئے۔ وکیل تنویر اختر نے کہاکہ مندر اسلام آباد کے ماسٹر پلان میں ہے ہی نہیں۔ چیف جسٹس نے کہاکہ ماسٹر پلان میں کوئی سیکٹر نہیں ہے، آپ ہمارا بنی گالہ والا فیصلہ پڑھ لیں، یہیں سے پتہ چلتا ہے کہ آپ کے پاس کوئی گراؤنڈ نہیں، ماسٹر پلان میں صرف یہ لکھا ہے کہ شہرکو کس طرح بنایا جائیگا،آپ کس طرح متاثر ہیں۔چیف جسٹس نے کہاکہ پہلا وزیر قانون کون تھا؟ جس کو قائداعظم نے لگایا تھا؟ بتائیں نا آپ بار کے سنیئر ممبر ہیں اور اس شخص کا پاکستان بنانے میں اہم کردار تھا، یہ کتنا عجیب ہے کہ آپ نہیں جانتے کہ پہلا وزیرقانون کون تھا۔چیف جسٹس نے کہاکہ یہ بہت اہم چیزیں ہیں، ہم دنیا میں رہتے ہیں، نبی اکرم ؐ بہت بڑے لیڈر ہیں، کیا یہ عدالت قائداعظم کو ڈس اون کردے، یہ بہت عجیب ہے کہ آپ تاریخ نہیں جانتے، ہم نے بھی صرف قائداعظم کی تصویریں لٹکا دی ہیں۔ بعد ازاں عدالت نے سماعت ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر پٹیشنر کو تیاری کرکے آنے کی ہدایت کی۔

ہدایت

مزید :

صفحہ اول -