حسا س ادارو؎ں کیخلاف بیان بازی کے الزام میں مقدمہ درج، جیل میں ڈالو اور زور سے بولوں گا: جاوید ہاشمی

حسا س ادارو؎ں کیخلاف بیان بازی کے الزام میں مقدمہ درج، جیل میں ڈالو اور زور ...

  

ملتان (نیوز رپورٹر) سینیئر سیاستدان و لیگی رہنما مخدوم جاوید ہاشمی نے کہا ہے کہ آئین توڑنے والوں کے خلاف بات کرتا رہوں گا، مجھے جیل میں ڈالنا ہے تو ڈال دیں، جیلوں سے ڈرنے والا نہیں ہوں،اپنی ضمانت بھی نہیں کراونگا،جیل میں مر جاؤنگا لیکن حق اور سچ کا پرچم بلند رکھونگا،میں نے تو اپنے عزیز و اقارب کو بھی کہہ دیا ہے کہ اگر میری گرفتاری ہو جائے تو میری ضمانت کی درخواست جمع نہ کرانا، نظام کو ٹھیک کرنے کے لیے آخر کسی کو تو حتمی قربانی دینا ہوگی چلو میں ہی سہی، مجھ پر کسی قسم کا دباؤ نہیں ڈالا جا سکتا۔ افواج پاکستان کے بوٹوں کی خاک میری آنکھوں کا سرمہ ہے لیکن پاکستان کا آئین توڑنے والوں کے خلاف کیسے چپ رہ سکتا ہوں، آمروں نے جتنا افواج پاکستان اور اس ملک وقوم کو نقصان پہنچایا ہے کوئی اور نہیں پہنچا سکتا۔ یہ افواج میری ہے اور میں ان کاہوں۔ پاکستان، عوام اور افواج پاکستان کے دفاع کی جنگ لڑتا رہونگا۔ نہ میں نے کچھ لوٹا ہے اور نہ میں نے وطن کی مٹی سے کبھی غداری کی،حق سچ کی آوازہمیشہ بلند کرنا میری سرشت میں ہے۔ ملتان میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جاوید ہاشمی نے کہا کہ میں نے فوج کے خلاف کوئی بات نہیں کی، بتایا جائے کہ پانچ بار ملکی آئین کس نے توڑا ہے؟۔ آئین توڑنے والوں کے خلاف بات کرتا رہوں گا۔ میں نے اداروں کو نہیں لوٹا، قوم سے جھوٹ نہیں بولا، ہمیشہ حق سچ کے لئے آواز اٹھائی۔ فوج میری اپنی ہے، فوج کا احترام کرتا رہوں گا۔ مجھے مقدمات سے نہیں ڈرایا جا سکتا، مقدمات کروا کر جیل ڈالیں گے تو اور مزہ آئے گا، جیل میں رہ کر کتابیں لکھوں گا اور زیادہ زور سے بولوں گا۔ جمہوریت کے لئے جنگ لڑتا رہوں گا۔دریں اثناء پولیس تھانہ کینٹ نے حساس اداروں کے خلاف بیان بازی کے الزام میں مخدوم جاوید ہاشمی کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔پولیس ذرائع کے مطابق تھانہ کینٹ میں مخدوم جاوید ہاشمی کے خلاف ریاستی اداروں پر تنقید پر مقدمہ نمبر 647/20 درج کیا گیا ہے جبکہ موجودہ حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے ایف آئی آر کو سیل کر دیا گیاہے جس پر فی الحال کو ئی کاروائی نہ کی جائے گی جبکہ اس حوالے سے پولیس افسران نے کسی طرح کی تصدیق کر نے سے انکار کیا ہے۔

جاوید ہاشمی

مزید :

صفحہ اول -