محبوس برآمد، والدہ کے ساتھ جانے کی اجازت

  محبوس برآمد، والدہ کے ساتھ جانے کی اجازت

  

ملتان (خصو صی رپورٹر )ہائیکورٹ ملتان بنچ کے سینئر جج جسٹس محمد امیر بھٹی نے دوسرے روز بھی ڈیڑھ سو کے لگ بھگ رٹ(بقیہ نمبر37صفحہ6پر)

درخواستوں اور ارجنٹ کیسز کی سماعت کر کے ریکارڈ قائم کر دیا۔ انہوں نے مختلف کیسز میں ڈپٹی کمشنر ملتان، ڈی پی او ساہیوال،ڈی پی او ڈیرہ غازی خان، میڈیکل سپریٹنڈنٹ نشتر ہسپتال، محکمہ انہار مظفرگڑھ کے افسران، ڈی ایس پیز اور ایس ایچ اوز کو ان پرسن طلب کیا ہوا تھا۔ پورا دن ان کی عدالت وکلاء اور سائلین سے کھچا کھچ بھری رہی گرمیوں کی چھٹیوں میں ہائیکورٹ ملتان بنچ کی رونقیں بحال ہوگئیں اور سائلین سینئر جج کے دلیرانہ اور حقیقت پسندانہ فیصلوں کی وجہ سے ریلیف محسوس کر رہے ہیں۔ سائلین کا کہنا ہے کہ اگر کیسز کی ڈسپوزل کی رفتار کو برقرار رکھا جائے تو کیسز کے التوا میں جانے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔ بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی شعبہ کامرس کے طلباء نے بتایا کہ انہوں نے وزیراعظم پروگرام کے تحت فیس واپسی کے لیے 2015 میں رٹ دائر کی جس پر ابھی تک فیصلہ نہیں اسی طرح سینکڑوں کیسز گزشتہ دس سالوں سے لٹکے ہوئے ہیں۔ کوئی پرسان حال نہیں۔

اجازت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -