پارا چنار، پاڑہ چمکنی تنازعہ کے حل کیلئے بالش خیل قبائل کے ننھے بچوں کی انوکھی ریلی

پارا چنار، پاڑہ چمکنی تنازعہ کے حل کیلئے بالش خیل قبائل کے ننھے بچوں کی ...

  

پاراچنار(نمائندہ پاکستان)بالش خیل قبائل کے ننھے بچوں نے پاراچنار شہر میں ریلی نکالی اور حکومت سے بالش خیل پاڑہ چمکنی تنازعے کے حل کیلئے اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا، اپر کرم کے نورکی اور لقمان خیل قبائل کے مابین اراضی تنازعہ پر جھڑپ میں تین افراد زخمی ہوگئے پاراچنار شہر میں بالش خیل قبائل کے ننھے بچوں اور بچیوں نے بالش خیل اراضی تنازعہ حل کرنے کے حوالے سے کیلئے شہر میں ریلی نکالی اور حکومت سے بالش خیل اراضی تنازعہ حل کرنے کے لئے اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ریلی ایدھی پارک پاراچنار سے شروع ہوئی اور مختلف راستوں سے ہوتی ہوئی پریس کلب پر اختتام پذیر ہوئی ریلی میں شریک بچوں بچیوں نے بینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر بالش خیل اراضی تنازعہ کے حل کے حوالے نعرے درج تھے ریلی میں شریک بچی ردا نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ وہ امن چاہتے ہیں اور حکومت ان کے علاقے میں قیام امن کیلئے اقدامات اٹھائے اور اراضی تنازعہ حل کرکے ان کے مستقبل کو تباہی سے بچایا جائے، ضلع کرم میں مختلف قبائل کے مابین زمینی تنازعات شدت اختیار کررہی ہے اور اب تک پچاس سے زائد تنازعات حل طلب ہیں اور اب تک سینکڑوں افراد ان تنازعات کے نذر ہوچکے ہیں زمینی تنازعہ کا ایک اور واقعہ آج نورکی اور لقمان خیل قبائل کے مابین اس وقت جھڑپ ہوئی جب ایک فریق نے دوسرے فریق کے نئے بننے والے گھر کو آگ لگا کر جلا دیا اس واقعے میں فریقین کے تین افراد زخمی ہوگئے ضلع کرم کے عوام کا کہنا ہے کہ زمینی تنازعات روز بروز شدت اختیار کررہی ہے انہوں نے حکومت سے ان تنازعات کے حل کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے

مزید :

پشاورصفحہ آخر -