وفاقی سیکرٹری آبی وسائل کی داسوہائیڈروپراجیکٹ کوتیز کرنے کی ہدایت

  وفاقی سیکرٹری آبی وسائل کی داسوہائیڈروپراجیکٹ کوتیز کرنے کی ہدایت

  

 پشاور(سٹاف رپورٹر)وزارت آبی وسائل کے وفاقی سیکرٹری چوہدری محمد اشرف نے داسو ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کے لیے ضلع کوہستان میں حصول اراضی کا عمل مزید تیز کرنے، مقامی آبادیوں کے تحفظات دور کرنے اور متاثرہ آبادیوں اور مالکان اراضی کے لئے منظور کیے گئے بنیادی سہولتوں کے منصوبے جلد مکمل کرنے کی ہدایت کی ہے جبکہ کمشنر ہزارہ ڈویژن ریاض خان محسود نے حصول اراضی اور ترقیاتی سکیموں کے ضمن میں مقامی لوگوں کے تحفظات اور تنازعات بات چیت کے ذریعے حل کرنے کے لیے ضلعی انتظامیہ، قانون نافذ کرنے والے اداروں، واپڈا اور مقامی عمائدین پر مشتمل مصالحتی کمیٹی تشکیل دینے کی تجویز پیش کی ہے۔انہوں نے کوہستان کی ضلعی انتظامیہ کو متاثرین کے اطمینان کے لیے مسجد، سکولوں اور مراکز صحت کی تعمیر اور بجلی و سیوریج وغیرہ کے منصوبوں کو ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے کی ہدایت کی۔ یہ ہدایات منگل کے روز کمشنر ہاؤس میں داسو ہائیڈرو پاور پراجیکٹ کے لیے حصول اراضی کے اقدامات کا جائزہ لینے کے لئے وفاقی سیکرٹری آبی وسائل کی صدارت میں منعقد کیے گئے اجلاس میں جاری کی گئیں۔ اجلاس میں کمشنر ہزارہ ریاض خان محسود، ڈپٹی کمشنر اپر کوہستان محمد عارف یوسفزئی اور وزارت آبی وسائل و محکمہ مال کے متعلقہ حکام نے شرکت کی۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ داسوہائیڈ روپاور پراجیکٹ ورلڈ بینک کی مالی معاونت سے 511 ارب روپے کی لاگت سے تعمیر کیا جائے گا جس سے 4320 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔ڈیم کے لیے کل 7550 ایکڑا راضی حاصل کی جائے گی جس میں سے 1535ایکڑ اراضی حاصل کر کے اس کے مالکان کو 4.39ارب روپے معاوضے کی ادائیگی کردی گئی ہے جبکہ مزید 3223ایکڑ اراضی کا سروے مکمل کر لیا گیا ہے اور 1736 ایکڑ کا سر وے زیر تکمیل ہے۔ وفاقی سیکرٹری چوہدری محمد اشرف نے حصول اراضی کا عمل تیز کرنے کے لئے محکمہ مال، ضلعی انتظامیہ اور صوبائی حکومت کے اقدامات کو سراہتے ہوئے کہا کہ متاثرہ مالکان کو معاوضہ کی ادائیگیوں سے مقامی لوگوں کی طرف سے مزاحمت میں کافی حد تک کمی آئی ہے اس لیے اراضی سے متعلق تمام تنازعات اور تحفظات کو عمائدین اور مالکان کے ساتھ بات چیت کے ذریعے حل کر کے باقی ماندہ اراضی کے حصول کے لیے بھی معاوضوں کی جلد ادائیگی یقینی بنائی جائے۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ آبادیوں کی بنیادی سہولتوں کے لیے منظور کی گئی 47ترقیاتی سکیمیں بھی جلد مکمل کی جائیں اور ان منصوبوں میں کمیلامیں مسجد کی تعمیر، جلکوٹ کھائی پر پل کی تعمیر، آبنوشی سکیم کی بحالی اور11 کے وی ٹرانسمشن لائن کے علاوہ سکولوں اور مراکز صحت کی سکیموں کو ترجیح دی جائے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ تمام ترقیاتی منصوبے متعلقہ ضلعی انتظامیہ کی وساطت سے مکمل کئے جائیں۔ انہوں نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ حصول اراضی کے عمل اور ترقیاتی منصوبوں میں تاخیر سے نہ صرف مقامی لوگوں میں بے چینی پھیلے گی بلکہ ڈیم کی لاگت میں اضافے کا باعث بھی بنے گی۔ وفاقی سیکرٹری نے واضح کیا کہ داسو ڈیم کے منصوبے سے سب سے زیادہ فائدہ صوبہ خیبر پختونخوا اور ضلع کوہستان کو پہنچے گا اور صوبہ کے مفاد میں خیبرپختونخوا حکومت کا وزارت آبی وسائل وواپڈا سے تعاون قابل تحسین ہے۔کمشنر ہزارہ ریاض خان محسود نے اس موقع پر داسو ڈیم کی تعمیر میں کمشنر آفس اور ضلعی انتظامیہ کے بھرپور تعاون کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ وہ مقامی آبادی کے تنازعات حل کرنے کی غرض سے عنقریب ضلع کوہستان کا دورہ کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کو ترجیح دی جائے گی اور مقامی عمائدین کا اعتماد بحال کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کئے جائیں گے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -