کورونا ویکسین انسانوں پر تجربے کے آخری مرحلے میں داخل

کورونا ویکسین انسانوں پر تجربے کے آخری مرحلے میں داخل
کورونا ویکسین انسانوں پر تجربے کے آخری مرحلے میں داخل

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)کورونا وائرس کے حوالے سے اچھی خبر یہ ہے کہ اس وبا کے لیے تیار کی گئی ویکسین انسانوں پر تجربے کےآخری مراحل میں داخل ہوگئی ہے اور اب تک کے نتائج کو بھی مثبت قرار دیا جارہاہے۔

بی بی سی کے مطابق امریکی دوا ساز کمپنی موڈرنا کا کہنا ہے کہ ان کی تیارکردہ کورونا ویکسین 27 جولائی سے انسانوں پر تجربے کے آخری مراحل میں داخل ہو جائے گی۔

دواساز ادار ے کا کہنا ہے کہ وہ تیارکی جانے والی ویکسین کو بڑے پیمانے پر استعمال کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں اور اس ضمن میں تیس ہزار افراد پر تجربہ کیاجائے گا۔

اس ویکسین کے انسانوں پر تجربے کے حوالے سے تفصیلات امریکی محکمے کی کلینیکل ٹرائلز نامی سرکاری ویب سائٹ پر جاری کی گئی ہیں۔ تفصیلات میں بتایا گیا ہے کہ یہ تجربات اکتوبر 2022 تک جاری رہیں گے۔

امریکی دوا ساز ادارے موڈرنا کی جانب سے حالیہ اعلان نیو انگلینڈ جرنل آف میڈیسن میں ایک تحقیق کے نتائج چھپنے کے بعد سامنے آیا ہے۔ اس تحقیق میں کہا گیا ہے کہ 45 افراد جنھیں یہ ویکسین لگائی گئی تھی ان میں کورونا وائرس کے خلاف اینٹی باڈیز بنی ہیں جو کہ حوصلہ افزا بات ہے۔

موڈرنا کے ساتھ ساتھ دیگر کمپنیاں بھی کورونا کی ویکیسن بنانے کی دوڑ میں شامل ہیں۔ تاہم عمومی خیال ہے کہ ویکیسن میں تیار ہونے میں مزید ایک سال کا عرصہ درکار ہے۔

خیال رہے کورونا وائرس سے دنیا بھر میں متاثرہ افراد کی تعداد ایک کروڑ 32 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ اب تک اس مرض کے باعث پانچ لاکھ 77 ہزار سے زائد افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -