بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمن کےدرمیان  ٹیلی فونک رابطہ،سیاسی حلقوں میں چہ مگوئیاں شروع

بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمن کےدرمیان  ٹیلی فونک رابطہ،سیاسی ...
بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمن کےدرمیان  ٹیلی فونک رابطہ،سیاسی حلقوں میں چہ مگوئیاں شروع

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ نے حبس زدہ موسم میں حکومت کے خلاف سیاسی محاذ میں مزید گرمی پیدا کر دی، پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ،اہم ملکی سیاسی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال۔

تفصیلات کے مطابق بلاول بھٹو زرداری اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان ٹیلی فونک رابطہ ہوا ہے جس میں دونوں رہنماؤں نے ملکی سیاسی صورتحال پر تفصیلی گفتگو اور مشاورت کی ہے۔ دونوں رہنماؤں نے بجٹ کے بعد بدترین معاشی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا۔ چیئرمین پیپلزپارٹی نےمولانا فضل الرحمان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں نے حکومتی کرپشن پر سوالات اٹھائے مگر عمران خان نے کوئی جواب نہیں دیا۔ مولانا فضل الرحمن نے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہو چکی ہے۔اس سے قبل مولانا فضل الرحمان نے امیر شریعت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ فاٹا کا انضمام اسمبلی نے نہیں کیا اس سے کروایا گیا ہے، یہ کام پارلیمنٹ کی گردن مروڑنے والی قوت نے کروایا ہے، ہم کشمیریوں کے لیے حق مانگتے ہیں اور اپنے لوگوں کو حق نہیں دیتے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل گذشتہ ہفتے مولانا فضل الرحمان نے بلاول ہاؤس کراچی میں سابق صدر آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری سےتفصیلی ملاقات کی تھی اور حکومت کے خلاف مشترکہ جدوجہد پر اتفاق کیا تھا ۔سیاسی مبصرین کے مطابق مولانا فضل الرحمان کا موجودہ حالات میں سیاسی محاذ گرم کرنا حکومتی مشکلات میں اضافے کا سبب بن سکتا ہے تاہم "مائنس ون" کے حوالے سے پھیلی باتیں کسی منطقی انجام تک پہنچتے دکھائی نہیں دیتیں۔ 

مزید :

قومی -