دریا دل ارب پتی جو عرب ملکوں میں قیدیوں کے قرضے ادا کر کے انہیں رہا کر رہاہے

دریا دل ارب پتی جو عرب ملکوں میں قیدیوں کے قرضے ادا کر کے انہیں رہا کر رہاہے
دریا دل ارب پتی جو عرب ملکوں میں قیدیوں کے قرضے ادا کر کے انہیں رہا کر رہاہے

  

دبئی (نیوز ڈیسک) بھارت سے تعلق رکھنے والے دبئی کے تاجر فیروز مرچنٹ کا شمار ایشیاءسے تعلق رکھنے والے متحدہ عرب امارات کے کامیاب ترین کاروباریوں میں ہوتا ہے۔ ان کے بزنس گروپ کی سونے کے زیورات فروخت کرنے کی دکانیں ہیں اور فیروز مرچنٹ کی دولت 44 کروڑ ڈالر سے زیادہ بتائی جاتی ہے۔ تاہم اس سے بڑھ کر ان کی وجہ شہرت یہ ہے کہ ابھی تک یہ 10 لاکھ ڈالر (10 کروڑ پاکستانی روپے) سے زائد خرچ کرکے متعدد قیدیوں کو جیلوں سے رہائی دلواچکے ہیں۔

مزیدپڑھیں:لڑکیوں کی وہ حرکات جو ان کے خیال میں لڑکوں کو پسند آتی ہیں ،لیکن حقیقت کیاہے،مردوں نے دل کی بھڑاس نکال دی

فیروز مرچنٹ کے مطابق وہ سیلف میڈ بزنس مین ہیں اور جب وہ دبئی آئے تھے تو ان کے پاس کچھ بھی نہ تھا، اب وہ ان لوگوں کی مدد کرنا چاہتے ہیں جو ترقی کرنے کی بجائے مسائل میں گِھر گئے۔ اب تک وہ قریباً 4 ہزار قیدیوں کو ان کے ذمہ قرض ادا کرکے رہائی دلواچکے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ یہ کام 2011ءسے کررہے ہیں اور قیدیوں کی فہرست انہیں جیل حکام کی طرف سے فراہم کی جاتی ہے۔ یہ وہ قیدی ہوتے ہیں جن کا جیل میں رویہ اچھا ہوتا ہے اور حکام سمجھتے ہیں کہ انہیں دوسرا موقع ملنا چاہیے۔

ایک عرب اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے ایک پاکستانی اور ایک بھارتی قیدی کا ذکر کیا۔ ان کا کہنا تھا پاکستانی سے ملاقات ہوئی تو اس نے بتایا کہ خاندان کے 12 لوگوں کی ذمہ داری اس کے سر پر ہے اور وہ ساڑھے چھ سال سے قید ہے۔ اگر رہائی مل جائے تو گھر واپس جاکر محنت کروں گا۔ ان کے مطابق ابتداءمیں انہوں نے یہ کام شروع کیا تو دیکھا کہ رہائی پانے والوں میں سے زیادہ تر لوگ واقعی دوبارہ اپنی غلطیاں نہ دہراتے تھے۔ اس سے انہیں مزید حوصلہ ملا اور 4 سال بعد یہ مشن آج بھی جاری ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس