حکمران ناموس رسالت ایکٹ میں تبدیلی کا خوب دیکھنا چھوڑ دیں،غلام عباس

حکمران ناموس رسالت ایکٹ میں تبدیلی کا خوب دیکھنا چھوڑ دیں،غلام عباس

لاہور (خبرنگار) ناموس رسالت ﷺ ایکٹ میں ترمیم کرنے کی کوشش کی گئی تو مسلمان لبیک محمد ﷺ صلے علیٰ کے نعرے لگاتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئیں گے اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھ کر ناموس رسالت ﷺ پر شب خون مارے کی ہرگز اجازت نہیں دی جائے گی ایسا کرنے کی جسدن کوشش کی گئی وہ دن حکومت کا آخری دن ہوگا ،اسلامی تحریک طلبہ پاکستان کے چیئرمین غلام عباس صدیقی نے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ناموس رسالت ایکٹ295۔C میں تبدیلی کا خوب دیکھنا حکمران چھوڑ دیں گستاخ رسول کی سزا قرآن،سنت رسول اللہ ﷺ،خلیفۂ اول سیدنا صدیق اکبرؓ ،خلفائے ثلاثہؓ اور امت مسلمہ کا متفقہ فیصلہ ہے اسے کوئی حکمران تبدیل کرنے کا حق نہیں رکھتا ،مسلمان اپنی جانیں تو قربان کر سکتے ہیں مگر ناموس رسالت پر آنچ نہیں آنے دیں گے ،جب تک ایک بھی مسلمان باقی ہے تحفظ ناموس رسالتﷺ کی جدوجہد جاری رہے گی انہوں نے کہا کہ حکمران 1971 کی تحریک ختم نبوت کو یاد رکھیں اگر ناموس رسالت ﷺ کے قانون میں ترمیم کی جسارت کی گئی تو فیصلہ کن تحریک شروع ہوگی جو حکمرانوں کا اقتدار بہاکر لے جائے گی،مسلمانوں کو ناموس رسالت ایکٹ میں ترمیم کسی صورت میں قبول نہیں۔

،اسلامی تحریک طلبہ کے سربراہ نے کہا کہ اسلام دشمن قوتوں کے جھانسے میں جو بھی آیا وہ ذلیل ہوا ،اسلام دشمن چاہتے ہیں کہ ناموس رسالت ایکٹ کو ختم کیا جائے مگر ان کی یہ خواہش کبھی بھی اہل ایمان کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔اسلامی تحریک طلبہ کے کارکنان کا سرمایہ حیات عشق رسولﷺ ہے تحریک کے کارکنان تحفظ ناموس رسالت کیلئے ہر وقت تیار ہیں ناموس رسالت کی ہر تحریک میں ہراول دستے کاکام سرانجام دیں گے(انشاء اللہ)۔

مزید : میٹروپولیٹن 4