الیکشن سسٹم ٹھیک نہ ہونے تک کرپٹ لوگ پارلیمنٹ سے باہر نہیں نکلیں گے ‘ عمران خان

الیکشن سسٹم ٹھیک نہ ہونے تک کرپٹ لوگ پارلیمنٹ سے باہر نہیں نکلیں گے ‘ عمران ...

 اسلام آباد(آن لائن)پاکستان تحریک انصاف کے چےئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ کرپٹ لوگ الیکشن سسٹم ٹھیک نہ ہونے تک پارلیمنٹ سے باہر نہیں نکلیں گے،جوڈیشل کمیشن کے فیصلے کے بعد انتخابات ہوں یا نہ ہوں پاکستان بدل جائے گا،ہمارے پاس شہر بند کرانے کے لئے عوام کی طاقت ہے،ہمارا مستقبل پاکستان اور بھارت کے درمیان امن ہے،کشمیر کے مسئلے کے حل اور برصغیر میں امن سے تجارت بڑھے گی،نریندر مودی ڈرانے والی بُلی ہے اس کا کوئی ویژن نہیں۔نجی ٹی وی کو دئیے گئے انٹرویو میں عمران خان کا کہنا تھا کہ جوڈیشل کمیشن میں فارم15 کے انکشافات پر خوشی ہوئی،20ہزار فارم 15 نہ ہونے کا مطلب یہ ہے کہ یا بچے ہوئے بیلٹ پر ٹھپے لگائے گئے یا تھیلوں میں ووٹ ڈالے گئے،فارم 15نہ ہو تو سارے انتحابات مشکوک ہوجاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جوڈیشل کمیشن کا جو بھی فیصلہ ہوگا وہ قبول کریں گے،کمیشن میں ابھی تک جو ثابت ہوا ہے وہ یہ ہے کہ 20ہزار فارم15نہیں ہیں،انگوٹھوں کی تصدیق نہیں ہوسکی،اڑھائی کروڑ ووٹ کا ریکارڈ نہیں ہے،149 حلقوں میں5 فی صد سے زائد اضافی بیلٹ بھیجے گئے آر اوز نے امیدواروں کی غیر موجودگی میں نتائج بنائے۔انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ عام انتخابات2015ء میں ہوں گے تاہم انتخابات ہوں یا نہ ہوں کمیشن کے فیصلے کے بعد بہتری ہوگی اور پاکستان بدل جائے گا۔انہوں نے کہا کہ آرمی ایک ادارہ ہے ملک نوازشریف چلاتا ہے آرمی نہیں،میں نے آرمی چیف سے بھی کہا تھا کہ نوازشریف کی زبان پر یقین نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اسمبلی میں یمن کے مسئلے کی وجہ سے گیا تھا،مجھے ڈر تھا کہ نوازشریف جی سی سی کے دباؤ اور ڈالر کی خاطر یمن جنگ کا حصہ نہ بن جائے۔عمران خان نے کہا کہ نادرہ پر حکومتی دباؤ ہے ہم ثابت کریں گے کہ نادرہ بھی میچ فکسنگ میں ملوث ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس عوام کی طاقت ہے ہم شہروں کو بند کرسکتے ہیں،دھرنا آرمی سکول پر حملے کی وجہ سے ختم کیا تھا،خیبرپختونخوا میں تاریخی انتخابات ہوئے،ہمارے خلاف ساری جماعتیں اکٹھے ہوکر لڑی ہیں پھر بھی ہم جیتے ہیں،پختونوں نے کبھی کسی کو دوسری بار نہیں آزمایا لیکن ہماری کارکردگی کی وجہ سے ہمیں دوبارہ منتخب کیا،یہ پاکستان کے سب سے بڑے انتخابات تھے جس میں45ہزار لوگ منتخب ہوئے،بدانتظامی تو ہونی تھی۔انہوں نے کہا کہ برصغیر میں امن کی ضرورت ہے،ہمارا مستقبل پاکستان اور بھارت کے درمیان امن میں ہے،کشمیر کا مسئلہ حل ہو اور خطے میں امن ہو تو تجارت بڑھ سکتی ہے اور پوری دنیا انویسٹمنٹ کیلئے یہاں بھاگے گی۔انہوں نے کہا کہ واجپائی کا ویژن تھا اس نے پاکستان کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھایا تھا،نریندر مودی میں کوئی ویژن نہیں،مودی ڈرانے والی بُلی ہے،اس نے صرف ایک حلقے کو خوش کرنے کیلئے بیان دیا ۔

مزید : صفحہ اول