سرکاری ملازمین کا تنخواہوں میں 30فیصد اضافہ نہ ہونے پر آج سے احتجاج کا اعلان

سرکاری ملازمین کا تنخواہوں میں 30فیصد اضافہ نہ ہونے پر آج سے احتجاج کا اعلان

لاہور(خبرنگار) ملک بھر کے سرکاری ملازمین وفاقی اور صوبائی بجٹ میں تنخواہوں میں 30 فیصد اضافہ نہ ہونے پر آج سے اگلے تین روز کے لئے سرکاری دفاتر میں مکمل بائیکاٹ اور پنجاب اسمبلی کے سامنے ڈے اینڈ نائٹ احتجاجی دھرنے کا اعلان کیا ہے۔ ایپکا کے منیر احمد بلوچ گروپ کے مرکزی رہنما چودھری محمد افضل کے مطابق جھرلو اور دھاندلی شدہ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے بجٹ کے خلاف آج 15تا 17جون تک تین روز کے لئے ملک بھر کے دفاتر میں مکمل ہڑتال، حکومت کے خلاف احتجاجی مظاہرے اور ماتم کریں گے۔ آج 15جون کو صوبائی دارالحکومت لاہور میں کوآپریٹیوڈیپارٹمنٹ بالمقابل جی پی او آفس،دی مال دن گیارہ بجے احتجاجی جلوس نکالا جائے گاجو سول سیکرٹریٹ کے سامنے اپنے مطالبات کے حق میں احتجاج کرے گا ۔کراچی میں پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ہو گا جس کی قیادت صوبائی صدر سندھ محمد اشرف بھٹی،صوبائی جنرل سیکرٹری سندھ میاں جاوید اختر کمبوہ کریں گے۔ کوئٹہ میں بھی پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ہو گا جس کی قیادت مرکزی صدرایپکا پاکستان منیر احمدبلوچ، صوبائی جنرل سیکرٹری بلوچستان گل محمد بازئی کریں کے ۔ ایپکا کے صوبائی صدر حاجی محمد ارشاد ، لالہ محمد اسلم، یونس بھٹی، ریاض الدین اور اکرم سلطان نے گزشتہ روز صحافیوں کو بتایا کہ وفاقی اور صوبائی بجٹ میں سرکاری ملازمین کے چارٹر آف ڈیمانڈ پر عمل درآمد نہیں کیا گیا ،مطالبات کی منظوری تک احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔ جس میں لاہور سمیت پنجاب بھر کے سرکاری دفاتر میں مکمل ہڑتال کی جائے گی ۔

مزید : صفحہ اول