خیبر پختو نخواہ کے مالی سال 2015 - 16کا 488ارب حجم کا بجٹ پیش ،سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10فیصد اضافہ ،پشاور کیلئے 29ار ب روپے کے خصوصی پیکج کا اعلان

خیبر پختو نخواہ کے مالی سال 2015 - 16کا 488ارب حجم کا بجٹ پیش ،سرکاری ملازمین کی ...
خیبر پختو نخواہ کے مالی سال 2015 - 16کا 488ارب حجم کا بجٹ پیش ،سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10فیصد اضافہ ،پشاور کیلئے 29ار ب روپے کے خصوصی پیکج کا اعلان

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پشاور (مانیٹرنگ ڈیسک)خیبر پختون خواہ کے وزیرخزانہ مظفر سید نے مالی سال 2015-16کے 488ارب کے مجموعی حجم کا بجٹ پیش کر دیاہے جس میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 10فیصد اضافہ ،میڈیکل الاﺅنس میں 25فیصد اضافہ اور پشاور کیلئے 29ارب روپے کے خصوصی پیکج کا اعلان کیاگیاہے،آئندہ دوسال میں تما م مصوبے کا لینڈ ریکارڈ کمپیوٹرائزڈ کرنے کا اعلان بھی ہے جبکہ ایک ہزار سے زائد سی سی کی گاڑیوں پر ایک بار دس ہزار ٹیکس وصولی کی تجویز دی گئی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق کے پی کے نے نئے مالی سال کے بجٹ میں تعلیم کیلئے مجموعی طور پر 97ارب 54کروڑ 22لاکھ روپے مختص کیے گئے ہیں جو کہ رواں مالی سال کے بجٹ سے 21فیصد زیادہ ہے،تعلیم کے بجٹ  میں 136منصوبوں کیلئے 21ارب مختص کیے ہیں ، سکولوں کیلئے ڈیڑھ ارب روپے سے نیا فرنیچر خریدا جائے گا، گورنمٹ کالج کے استاتذہ کیلئے ٹرانسپورٹ کے چار ج الاﺅنس کیلئے 10 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں ،صوابی میں لڑکیوں ،دیر بالا میں لڑکوں کے گورنمٹ کالج آف مینجمنٹ سائنسز منظورکیے گئے، ہند کو اکیڈمی کیلئے سات کروڑ روپے مختص ،آرمی پبلک سکول کے واقعے کے بعد سکولوں کو محفوظ بنانے کیلئے چار دیواری کیلئے چھ ارب مختص ،صوبے میں 500گورمنٹ ہائیر سیکنڈری سکول بنائے جائیں گے اور صوبے میں 150پرائمری نئے سکول قائم کیے جائیں گے،سرکاری لائبریری کی مرمت کیلئے 8کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں ۔

کے پی کے بجٹ میں صحت کیلئے 29ارب 95کروڑسے زائد رقم مختص کی گئی ہے جو کہ بجٹ کا دس فیصدہے، صحت کے 92منصوبوں کیلئے 12ارب 31کروڑمختص ،بچوں کی صحت کیلئے 10 کروڑ روپے ، ٹی بی ،یرقان اور کینسرکے مریضوں کو مفت علاج کرنے کی تجویز،5ارب 86کروڑ پانی کے 24منصوبوں کیلئے مختص ،پانچ اضلاع میں 1122شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیاہے ،صوبے کے چار اضلاع میں موبائل شفاخانوں کے قیام کی تجویز بھی دی گئی ہے ۔

مظفر سید نے خیبر پختون خواہ نے بتایا کہ بجٹ میں توانائی کے بحران کو ختم کرنے کیلئے 39منصوبوں کیلئے3 ارب 20کروڑروپے مختص کیے گئے ہیں ،بجلی کے 2250میگاواٹ کے 350منصوبوں کا آغاز کیا گیاہے جبکہ زراعت کیلئے تین ارب 51کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں۔بجٹ میں ضلعی حکومتوں کیلئے 25ارب روپے مختص کیے گئے ہیں ۔

بجٹ میں سالانہ ترقیاتی منصوبوہ کیلئے ایک کھرب 75ارب روپے مختص کیے گئے ہیں جن میں سےصوابی سے سوات تک موٹروے بنائی جائے گی ، ایک ار ب 75کروڑ روپے کی لاگت سے حیات آباد فلائی اوور پراجیکٹ کی منظوری دی گئی ہے ،صوبائی ترقی کے پروگرام میں 525منصوبے شامل ہیں ۔بجٹ میں 1ارب 21کروڑ صحت اور کھیلوں کے 52منصوبوں کیلئے مختص کیے گئے ہیں،۔

مظفر سید نے کہا کہ کے پی کے حکومت نے دوسال میں صوبے میں عوامی فلاح بہبود کا کام کیاہے اور کے پی کے صوبے کی مثال پورے ملک میں دی جاتی ہے اور بجٹ میں فلاحی کاموں کیلئے 39ارب 16کروڑ روپے رکھے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بجٹ میں جنگلات کیلئے ایک ارب 83کروڑ ،قرضوں پر مارک اپ کی ادائیگی کیلئے 7 ارب سے زائد مختص ،پولیس کیلئے بجٹ میں34ارب سے زائد کی رقم مختص کی گئی ہے جبکہ اخراجات جاریہ کے لیے 298ارب مختص کیے گئے ہیں ۔

وزیر خزانہ کا کہناتھا کہ محاصل کا کل تخمینہ 487ارب 88کرور 40لاکھ روپے ہے ،صوبے کے بجلی گھروں سے تین ارب 30کروڑ ملنے کا امکا ن،جنرل سیلز ٹیکس کی مدن میں 14ارب ملنے کی توقع ہے ،تیل و گیس کی رائلٹی کی مد میں 19ارب 41کروڑملنے کی توقع ہے ، بیرونی امداد کی مد میں 32ارب 88کروڑ سے زائد ملنے کا امکان ہے، لکڑی کی فروخت سے آٹھ ارب ملنے کی توقع ہے ،دیگر محاصل سے تقریبا 37ارب سے زائد آمد ن ہو گی ،دوست ممالک ملٹی ڈونر ٹرسٹ فنڈ ز کے لیے 15ارب سے زائد دیں گے ،

مزید : قومی /Headlines