ڈی جی رینجرز کو جرائم کا علم تھا تو ایکشن کیوں نہیں لیا:فرحت اللہ بابر

ڈی جی رینجرز کو جرائم کا علم تھا تو ایکشن کیوں نہیں لیا:فرحت اللہ بابر
ڈی جی رینجرز کو جرائم کا علم تھا تو ایکشن کیوں نہیں لیا:فرحت اللہ بابر

  

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)پیپلز پارٹی کے سینیٹر فرحت اللہ بابر نے کہا ہے کہ ڈی جی رینجرزکواگر کراچی میں ہونے والے جرائم کا علم تھا تو انہوں نے ایکشن کیوں نہیں لیا۔فرحت اللہ بابرنے ڈی جی رینجرز کے خلاف سینٹ میں تحریک التوا جمع کرواتے ہوئے کہا ہے کہ ڈی جی رینجرز نے اپنی رپورٹ میں ایک سیاسی جماعت پر بھتہ خوری کا الزام لگایا تھا اوراگر انہیں علم تھا کہ کون سی سیاسی جماعت بھتہ لے رہی ہے تو انہوں نے اس جماعت کے خلاف ایکشن لینا چاہیے تھا۔ان کا کہنا تھا کہ رینجرز کو کراچی میں 4ماہ کیلئے بلایا گیاتھا مگر اب پورے دوسال ہو چکے ہیں اور اب رینجرز اپنے اختیارات سے تجاوز کر رہے ہیں ۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ رینجرز کو بلانے کا اختیار صوبائی حکومت کے پاس ہوتا ہے اور کراچی میں مخدوش صورت حال پر رینجرز کو طلب کیا گیا تھا اور گذشتہ دو سال سے کراچی میں امن بحالی کی کوششیں جاری ہیں۔سپریم کورٹ آف پاکستان نے 2010ء میں اپنے ایک واضح فیصلے میں یہ بھی لکھا تھا کہ چار بڑی سیاسی جماعتیں اپنے اپنے ونگ بنا کر بھتہ اکٹھی کرتی ہیں اور اس وقت پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت تھی لیکن شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کے لئے کوئی اقدام نہیں اٹھایا گیاتھا۔

مزید : قومی