جہاز کے کیبن میں یہ ٹرائی اینگل جیسے چھوٹے چھوٹے نشان دراصل کس لئے ہوتے ہیں اور آپ کی حفاظت کیلئے انتہائی ضروری کیوں ہیں؟ جانئے ہوائی جہاز میں آپ کی حفاظت کیلئے چھپی ان چیزوں کے بارے میں جن کا آپ کو بالکل بھی معلوم نہیں

جہاز کے کیبن میں یہ ٹرائی اینگل جیسے چھوٹے چھوٹے نشان دراصل کس لئے ہوتے ہیں ...
جہاز کے کیبن میں یہ ٹرائی اینگل جیسے چھوٹے چھوٹے نشان دراصل کس لئے ہوتے ہیں اور آپ کی حفاظت کیلئے انتہائی ضروری کیوں ہیں؟ جانئے ہوائی جہاز میں آپ کی حفاظت کیلئے چھپی ان چیزوں کے بارے میں جن کا آپ کو بالکل بھی معلوم نہیں

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ہوائی جہازوں میں کئی ایسے نشانات اور علامات ہوتی ہیں جن کے بارے میں اکثر فضائی سفر کرنے والے مسافروں کومعلومات نہیں ہوتیں۔ سوال و جواب کی ویب سائٹ Quora پر پائلٹس و دیگر فضائی عملے کے افراد لوگوں کے سوالات کے جواب میں ان نشانات اورآلات کے متعلق بتایا ہے جو ڈیلی میل نے اپنی اس رپورٹ میں بیان کیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق جہاز کے اندر دیواروں کے اوپر کئی جگہوں پر سیاہ رنگ کی چھوٹی چھوٹی تکونیں (Triangles)بنی ہوتی ہیں۔ برونو جیلیسن نامی پائلٹ نے Quora پر ایک صارف کے سوال پر ان تکونوں کے بارے میں بتایا کہ ”یہ تکونیں اس جگہ کی نشاندہی کرتی ہیں جہاں سے پائلٹ جہاز کے پروں کو واضح طور پر دیکھ سکتے ہیں۔ ٹیک آف سے پہلے پائلٹ پروں کو اچھی طرح چیک کرتا ہے اور سلیٹ پر لکھے نمبر پڑھتا ہے۔لہٰذا جس کھڑکی کے اوپر تکون بنی ہو وہ اسی سے آ کر جہاز کے پروں کو دیکھتے ہیں کیونکہ یہاں سے ان کی پوزیشن اچھی طرح دیکھی جا سکتی ہے اور نمبر بخوبی پڑھے جا سکتے ہیں۔

ایئرہوسٹس نے مسافر جہازوں میں ایسے چھپے ہوئے بٹن کے بارے میں بتا دیا جس کے بارے میں معلومات آپ کا سفربے حد آسان بنا سکتی ہیں

ہوائی جہاز کے ایمرجنسی ایگزٹ سے تو سبھی واقف ہوتے ہیں لیکن اس کے ساتھ دونوں طرف جو ہینڈل لگے ہوتے ہیں ان کے بارے میں لوگ زیادہ نہیں جانتے۔ یہ ہینڈل دراصل جہاز کے عملے کی حفاظت کے لیے لگائے گئے ہیں۔ جب ایمرجنسی ہو اور وہ یہاں کھڑے ہو کر مسافروں کو باہر نکال رہے ہوں تو وہ ان ہینڈلوں کو پکڑ کر خود کو محفوظ رکھ سکیں تاکہ مسافروں کی دھکم پیل میں وہ خود بھی باہر نہ جا گریں۔فیڈرل ایوی ایشن کی طرف سے ایک اور چیز جہاز میں رکھنی لازمی قرار دی گئی ہے اور یہ چیز کلہاڑا ہے جس کا بھالہ سرخ رنگ کاہوتا ہے۔ انس معاذ نامی کیپٹن نے Quora پر بتایا کہ ”یہ کلہاڑا دراصل آگ بجھانے کی ڈیوائس کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ کاک پٹ میں یا جہاز کے کسی اور حصے میں کہیں آگ بھڑک اٹھے تو وہاں اس کلہاڑے سے کاٹ کر آگ لگنے کی اصل جگہ تک پہنچا جاتا ہے اور پھر وہاں سے اسے بجھادیا جاتا ہے۔

اکثر ہوائی جہازوں کے پروں کے اوپر سنہرے رنگ کی ہُک (Hook)لگی ہوئی ہے۔ اس کا مقصد مسافروں کو ایمرجنسی حالت میں پروں کے اوپر سے نکال کر بحفاظت نیچے اتارنا ہے۔ ایسی حالت میں ایک رسی اس ہُک کے ساتھ باندھی جاتی ہے جسے پکڑ کر مسافر پر کے اوپر چلتے ہیں۔ مسافروں کو باہر نکالنے کا یہ طریقہ عموماً اس وقت آزمایا جاتا ہے جب جہاز نے پانی کے اوپر ہنگامی لینڈنگ کی ہو۔ جہاز کی کھڑکیوں کے شیشے میں ایک چھوٹا سا سوراخ ہوتا ہے۔ ایوی ایشن کے ماہر فلپ سپیئرز کا کہنا تھا کہ ”دراصل جہاز کی کھڑکی شیشے کی تین تہوں پر مشتمل ہوتی ہے اور شیشے کی ان تینوں تہوں کے درمیان فاصلہ ہوتا ہے۔ یہ سوراخ شیشے کی درمیانی تہہ میں ہوتا ہے، جس کا مقصد ہوائی جہاز کے دباﺅ کو اندرونی تہہ کی بجائے بیرونی تہہ کی طرف منتقل کرنا اور اسے برابر رکھنا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...