سندھ ،تمام لاء کالجز ذوالفقارعلی بھٹو یونیورسٹی سے منسلک

سندھ ،تمام لاء کالجز ذوالفقارعلی بھٹو یونیورسٹی سے منسلک

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)حکومت سندھ نے صوبے کے تمام لاء کالجز کو شہید ذوالفقارعلی بھٹو یونیورسٹی آف لاء سے منسلک کردیاہے۔اس سلسلے میں نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔تفصیلاء ت کے مطابق صوبائی حکومت نے سندھ کے تمام قانون کے کالجز کو شہید ذوالفقار علی بھٹو یونیورسٹی آف لاء کراچی سے الحاق کے لئے بورڈ آف گورنرز قائم کر دیا ہے جسے بورڈ آف گورنرز فار لاء کالج کا نام دیا گیا ہے۔ بورڈ آف گورنرز 10 آفیشل ارکان اور 6 نان آفیشل ارکان پر مشتمل ہے جس کا چیئرمین جسٹس (ر)غلاء م سرور کورائی کو مقرر کیا گیا ہے۔آفیشل ارکان میں لاء یونیورسٹی کے وائس چانسلر، سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کے نامزد کردہ جج، سیکرٹری قانون یا اس کا نامزد کردہ رکن، ایڈووکیٹ جنرل سندھ، سیکرٹری یونیورسٹیز و بورڈز، وائس چیئرمین سندھ بار کونسل، پرنسپل اسلاء میہ لاء کالج، پرنسپل ایس ایم لاء کالج اور پرنسپل ذوالفقار علی بھٹو لاء کالج میمن گوٹھ کراچی شامل ہیں۔نان آفیشل اراکین میں سپریم کورٹ کے وکیل اختر حسین، ابرار حسین، ایس احمد علی شاہ، عبدالوہاب بلوچ، سندھ ہائیکورٹ کے وکیل حاکم علی تنیو اور بیرسٹر شیراز راجپر شامل ہیں۔نان آفیشل ارکان کی مدت 3 سال کے لئے ہوگی واضح رہے کہ شہید ذوالفقار علی بھٹو لاء یونیورسٹی کے ایکٹ میں یہ بات درج ہے کہ صوبے کے تمام لاء کالجز جو کسی بھی یونیورسٹی سے الحاق شدہ ہوں گے ان کا الحاق لاء یونیورسٹی سے ہو جائے گا۔یاد رہے کہ لاء یونیورسٹی چار سال قبل قائم ہوئی تھی اور اس کے پہلے وائس چانسلر جسٹس(ر)قاضی خالد اس کے وائس چانسلر ہیں جن کی کوششوں کے باعث بورڈ آف گورنرز قائم کر دیا گیا اس طرح اب جامعہ کراچی ،لیاری یونیورسٹی اور دیگر جامعات سے الحاق شدہ کالجز اب بورڈ آف گورنرز کے قیام کے ساتھ ہی لاء یونیورسٹی سے الحاق شدہ ہوگئے ہیں۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -