باہمی محبت و اخوت کو مزید فروغ دیا جائے‘ کسی مسلک کی توہین جائز نہیں‘ ساجد علی نقوی

باہمی محبت و اخوت کو مزید فروغ دیا جائے‘ کسی مسلک کی توہین جائز نہیں‘ ساجد ...

  

ملتان (سٹی رپورٹر) قائد ملت جعفریہ پاکستان اور اسلامی تحریک کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے اتحاد امت پر زوردیتے ہوئے کہا ہے کہ فرقہ واریت پھیلانے والے عناصر کو مذہبی جماعتیں اپنی صفوں سے نکال باہر کریں تاکہ مسالک کے درمیان مشترکات کو فروغ دیا جاسکے ۔پاکستان(بقیہ نمبر12صفحہ12پر )

علیحدہ وطن کے قیام کے مقاصدسے دور ہوچکا ہے۔ ملک کو واپس پٹڑی پر لانے کے لئے قانون کی حکمرانی قائم کرنا ہوگی۔ شیعہ علما کونسل لاہور کے عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سنی شیعہ محب اہل بیت اور حسینی ہیں، ان کا ایک دوسرے کے خلاف فرقہ وارانہ باتیں کرنا مناسب نہیں۔ اتحاد امت کی فضا کو بہتر بنانے اور اسلامی مکاتب فکر کے درمیان موجود مشترکات کو فروغ دینا چاہیے۔علامہ ساجد نقوی کا کہنا تھاکہ پاکستان میں اتحاد و وحدت کی فضا قائم کرنے میں ان کا بنیادی کردار ہے۔ یہاں ٹارگٹ کلنگ میں بے گناہ افرادکا قتل عام کیا گیا مگرہم نے کسی مسلک و مذہب پرالزام عائد نہیں کیا، کیونکہ قاتل گروہ خریدے گئے لوگوں پرمشتمل تھا،جو کسی مسلک کی نمائندگی نہیں کرتے۔ علامہ ساجد نقوی نے اتحاد بین المسلمین کی فضا کو مزید بہتر بنانے کے لئے مشترکہ پروگرام منعقد کروانے پر زوردیتے ہوئے کہا کہ باہمی محبت و اخوت کو مزید فروغ دیا جائے۔کسی مسلک کی توہین جائز نہیں علما کرام نے اسلامی نظریاتی کونسل کے پلیٹ فارم سے مشترکہ سفارشات دے کر اس اعتراض کو بھی ختم کردیا ہے کہ کس مسلک کا اسلام نافذ ہونا چاہیے۔ان کا کہنا تھا کہ دینی جماعتوں کو انسانی اقدار، بنیادی حقوق اور قانون کی حکمرانی کے لئے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے، اس کے لئے کارکنوں کی نظریاتی اور فکری تربیت ہونی چاہیے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -