میں نے اپنی پیدائش سے پہلے کا بھی حساب دیا ،یہ کوئی کرپشن کیس نہیں بلکہ ہمارے خاندان کے کاروبار کو الجھا یا جا رہا ہے ،آج تک سرکاری خزانے میں خرد برد کا الزام نہیں لگا :نواز شریف

میں نے اپنی پیدائش سے پہلے کا بھی حساب دیا ،یہ کوئی کرپشن کیس نہیں بلکہ ہمارے ...
میں نے اپنی پیدائش سے پہلے کا بھی حساب دیا ،یہ کوئی کرپشن کیس نہیں بلکہ ہمارے خاندان کے کاروبار کو الجھا یا جا رہا ہے ،آج تک سرکاری خزانے میں خرد برد کا الزام نہیں لگا :نواز شریف

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ میں نے ایک ایک پائی کا حساب دے دیا ہے ،میرے احتساب کا سلسلہ میری پیدائش سے بھی پہلے 1936سے شروع ہوا اور میری آئندہ نسلوں تک پھیلاہوا ہے ،پاکستان میں کوئی خاندان ایسا ہے جس کی تین نسلوں کا بے رحمانہ احتساب ہوا ہو؟۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی عوام کو واضح کرنا چاہتا ہوں یہ کوئی کرپشن کیس نہیں ہے ،یہ جو کچھ ہو رہا ہے اس کا سرکاری خزانے کی خرد برد یا کرپشن سے کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ ہمارے خاندان کے نجی معاملا ت اور کاروبار کو الجھا یا گیا ہے۔

تفصیل کے مطابق پاناما کیس جے آئی ٹی کے سامنے پیشی کے بعد باہر آکر وزیر اعظم نے میڈ یا سے گفتگو کی ،ان کا کہنا تھا کہ آئین کی سربلندی کے حوالے سے آج کا دن سنگ میل کا درجہ رکھتا ہے ،میری حکومت اور خاندان نے اپنے آپ کو احتساب کے لیے پیش کیا ۔انہوں نے قوم کو یاد دلاتے ہوئے کہا کہ سوا سال پہلے پاناما لیکس کا معاملہ سامنے آتے ہیں میں نے سپریم کورٹ کے ججز پر مشتمل کمیشن قائم کرنے کا اعلان کیا تھا ،اس وقت میر ی پیشکش کو سیاسی تماشوں کی نظر نہ کیا جاتاتو آج معاملہ حل ہو چکا ہوتا ۔ وزیراعظم نے کہا کہ میرا احتساب پیپلز پارٹی کے ادوار میں بھی ہوا جب سارے اثاثے قومیائے گئے ،اس وقت میں یونیورسٹی سے نیا نیا باہر آیا تھا ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس کے بعد ہمارا احتساب مشرف آمریت نے اس بے دردی سے کیا کہ ہمارے گھروں پر قبضے جما لیے ،اگر کرپشن کے ان الزامات میں سچائی ہوتی تو مشرف کو مجھے سزا دلوانے کے لیے طیارہ ہائی جیکنگ کے جھوٹے کیس کا سہارا نہ لینا پڑتا ۔

انہوں نے کہا کہ میں ایک بار پنجاب کا وزیراعلیٰ اور تین بار وزیراعظم بنا ہوں ،اس عرصے میں اربوں کھربوں کے منصوبے میری منظوری سے ہوئے ہیں ،موجودہ دور میں پاکستان میں اتنی سرمایہ کاری ہوئی جو گزشتہ 65سالوں میں نہیں ہوئی لیکن مخالفین کرپشن اورکک بیکس الزام کی حد تک بھی سامنے نہیں لاسکے ۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستانی عوام پر واضح کردینا چاہتا ہوں کہ یہ جو کچھ ہو رہا ہے اس کا سرکاری خزانے میں خرد برد یا کرپشن کے کسی الزام سے دور دور تک کوئی تعلق نہیں ہے بلکہ یہ ہمارے خاندان کے نجی اور کاروباری معاملات کو الجھا یا جا رہا ہے ،سرکاری خزانے سے اس کا کوئی لین دین نہیں ہے اور نہ ہی یہ کوئی کرپشن کیس ہے ۔

وزیراعظم نے کہا کہ چند دن میں جے آئی ٹی کی رپورٹ بھی سامنے آجائے گی اور عدالت کا فیصلہ بھی آجائے گا لیکن ہم سب کو یاد ہونا چاہیے کہ سب سے بڑی جے آئی ٹی بھی بیٹھنے والی ہے ،یہ جے آئی ٹی بیس کروڑ عوام کی ہے ،ہم سب کو اس جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونا ہے ۔اور ان سب سے بڑی عدالت اللہ کی ہے جو ظاہر اور باطن کو جانتا ہے اور کسی جے آئی ٹی کا محتاج نہیں۔نواز شریف نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ عوام کے فیصلوں کا احترام کیا جائے ،عوام کے فیصلے کو روند کر مخصوص ایجنڈے چلانے والی فیکٹریاں بند نہ ہوئیں تو ملک کی سالمیت بھی خطرے میں پڑ جائے گی۔انہوں نے کہا کہ میں اور میرا خاندان اس جے آئی ٹی اور عدالت میں بھی سرخرو ہو نگے اور عوام کی عدالت میں بھی کامیاب ہونگے ۔انہوں نے کہا کہ اب ہم تاریخ کا پہیہ پیچھے کی طرف موڑنے نہیں دیں گے ،وہ زمانے گئے جب سب کچھ پردے کے پیچھے چھپا رہ سکتا تھا ،اب کٹھ پتلیو ں کے کھیل نہیں کھیلے جا ئیں گے ۔وزیراعظم نے آخر میں کہا کہ لوگوں کے ذہنوں میں کئی سوالات ہیں ،میرے پاس بھی کہنے کو کئی باتیں ہیں جو آنے والے وقت میں کروں گا ۔

مزید خبریں :وزیر اعظم نوازشریف سے جے آئی ٹی میں 3گھنٹے تک تفتیش

مزید :

قومی -اہم خبریں -