گورنر مکہ کی جانب سے شروع کئے گئے ”مکہ دی سٹی آف سیف ہارٹ “ پروجیکٹ کا خیر مقدم

گورنر مکہ کی جانب سے شروع کئے گئے ”مکہ دی سٹی آف سیف ہارٹ “ پروجیکٹ کا خیر ...
گورنر مکہ کی جانب سے شروع کئے گئے ”مکہ دی سٹی آف سیف ہارٹ “ پروجیکٹ کا خیر مقدم

  


لندن (خالد پرویز) برطانیہ میں عازمین حج وعمرہ کی فلاح وبہبود کیلئے سرگرم عمل قومی فلاحی تنظیم ایسوسی ایشن آف برٹش حجاج نے گورنر مکہ خالد الفیصل کی جانب سے شروع کئے گئے پروجیکٹ ”مکہ دی سٹی آف سیف ہارٹ “ کا بھرپور خیر مقدم کیا ہے۔ اس پروجیکٹ کے تحت مکہ کے شہریوں کو مسجد الحرام کے اطراف اور عوامی مقامات پر ہارٹ اٹیک ایمرجنسی سے نبٹنے اور متاثرہ افراد کو فوری طبی امدا بہم پہنچانے کے امور سے متعلق تربیت دی جائے گی۔ اس پروجیکٹ کے پہلے مرحلہ میں تین سال میں مکہ کی بیس فیصد آبادی کو ٹریننگ دی جائے گی، اور باقی آبادی کو پریس میڈیا اور دیگر ذرائع ابلاغ کے ذریعے اس انتہائی اہم مسئلہ سے متعلق معلومات اور آگاہی دی جائے گی۔

ایسوسی ایشن آف برٹش حجاج نے پنے بیان میں کہا ہے کہ سعودی اتھارٹیز کی جانب سے دنیا بھر سے آنے والے لاکھوں عازمین حج و عمرہ کی صحت تندرستی کو یقینی بنانے اور کسی ایمرجنسی کی صورت میںاُن کی جانوں کی حفاظت کیلئے ایسے اقدامات کی بڑی شدت سے ضرورت تھی، اور دیگر ہیلتھ ایمرجنسی کی جانب بھی ایسے اقدامات کا دائرہ اختیار بڑھانے کی ضرورت ہے ۔ تاکہ غلطیوں اور کوتاہیوں سے وہاں ہونے والا معصوم انسانی جانوں کا ضیاع روکا جا سکے۔ ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ یورپ اور دیگر ترقی یافتہ ممالک کی نسبت بالخصوص حج کے موقع پر بیس لاکھ سے زائد انسانوں کے عظیم اہتمام میں مناسکِ حج و عمرہ کی ادائیگی کے دوران ڈسپلن، قوانین و ضوابط، ایک دوسرے کی حفاظت و احترام اور حادثات سے رہنے کا شعور و تربیت کے کلچر کا نہ صرف فقدان ہے بلکہ سرے سے اس کا کوئی وجود ہی نہیں ہے۔ عازمین کی ایک بڑی اکثریت کو فریضہ کی ادائیگی کے دوران زمینی حقائق درپیش مشکلات اور مسائل کا ادراک نہیں ہوتا۔ کسی قسم کی تعلیم و تربیت ، ٹریننگ یا پلاننک نہ ہونے کی وجہ سے وہاں المناک واقعات اور سانحات رونما ہوتے رہتے ہیں۔ مسلم اُمہ کے ذمہ داروں کو خواب غفلت سے بیدار ہونے کی ضرورت ہے۔

Seen by Shabab Younas at 3:36pm

مزید : برطانیہ


loading...