ہوٹل کی تعمیر، زمین کھودتے مزدوروں کو اچانک ایسی چیز نظر آگئی کہ ہر کسی کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، وہ چیز مل گئی جو آج تک کسی کو نہ ملی تھی

ہوٹل کی تعمیر، زمین کھودتے مزدوروں کو اچانک ایسی چیز نظر آگئی کہ ہر کسی کی ...
ہوٹل کی تعمیر، زمین کھودتے مزدوروں کو اچانک ایسی چیز نظر آگئی کہ ہر کسی کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، وہ چیز مل گئی جو آج تک کسی کو نہ ملی تھی

  

میکسیکو سٹی (نیو زڈیسک) وسطی امریکا کے ملک میکسیکو کے دارلحکومت میں ایک نئے ہوٹل اور کارپارکنگ کی تعمیر کیلئے کی جانے والی کھدائی کے دوران ایک ایسی حیرتناک چیز مل گئی کہ جسے ماہرین آثار قدیمہ کی حالیہ تاریخ کی عظیم ترین دریافت قرار دے رہے ہیں ۔ 

ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق کھدائی کی جگہ سے ہزاروں سال قدیم ایزٹک مندر ، شاہی دربار اور اس دربار میں پیش کی جانیوالی انسانی قربانیوں کے ہوش ربا آثار دریافت ہوئے ہیں۔ یہاں سے دریافت ہونے والی انسانی باقیات میں کٹی ہوئی انسانی گردنوں کی 32 سے زائد ہڈیاں بھی دریافت ہوئی ہیں ۔

غیر آباد جگہ پر قائم اس غار کے اندر دراصل کیا ہے؟ دیکھ کر آپ کو اپنی آنکھوں پر یقین نہیں آئے گا

یہ غیر متوقع تاریخی مقام میکسیکوسٹی کے رومن کیتھولک کیتھیڈرل کے قریب واقع ہے۔ میکسیکو کے ادارہ برائے بشریاتی و تاریخی تحقیق کے سربراہ ڈیاگو پرائٹو کا کہنا تھا کہ ان دریافتوں کی صورت میں ہم ان مقامات کو حقیقی شکل میں دیکھ سکتے ہیں جن کا تذکرہ اس سے پہلے صرف کتابوں اور کہانیوں میں ملتا تھا۔ ماہر آثار قدیمہ راﺅل پریرا نے بتایا کہ کٹی ہوئی انسانی گردنیں شاہی دربار کی سیڑھیوں کے نیچے سے ملی ہیں۔ یہ گردنیں یقینا ان بدقسمت لوگوں کی ہیں جنہیں مخصوص تہواروں پر انسانی قربانی کے طور پر پیش کیا جاتا تھا۔ میکسیکو کے حکام کا کہنا ہے کہ کھدائی اور تحقیق کا کام مکمل ہونے پر یہاں عالمی معیار کا ایک عجائب گھر تعمیر کیا جائے گاجس میں ہزار سال قدیم ایزٹک تہذیب کے وہ نوادرات رکھے جائیں گے جو دنیا میں کہیں اور نہیں دیکھے جا سکتے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -