ہائی کورٹ :پولیس کو خودمختار،غیر سیاسی ادارہ کے طور پر منظم کرنے کی درخواست باقاعدہ سماعت کے لئے منظور ،نوٹس جاری

ہائی کورٹ :پولیس کو خودمختار،غیر سیاسی ادارہ کے طور پر منظم کرنے کی درخواست ...

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے پولیس کو خودمختار،جواب دہ اور غیر سیاسی ادارہ کے طور پر منظم کرنے کے لئے دائر درخواست باقاعدہ سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومت کو نوٹس جاری کردیئے ہیں ۔یہ درخواست پاکستان بار کونسل کے رکن سینئر قانون دان محمد راحیل کامران شیخ نے دائر کی ہے جس میں مذکورہ مقاصد کے حصول کے لئے اعلیٰ عدلیہ کے ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں ایک خود مختار کمشن تشکیل دینے کی استدعا کی گئی ہے ۔درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پولیس آرڈر2002ءکے تحت پولیس کو کسی حد تک خود مختار، جواب دہ اور غیر سیاسی بنیادوں پر منظم کرنے کی کاوش کی گئی تھی جس میں بہتری لانے کی بجائے صوبہ پنجاب نے 10مئی 2017ءکو ایک آرڈننس کے ذریعے انسپکٹر جنرل پنجاب پولیس کی تقرری سے متعلق پولیس آرڈر2002ءکے آرٹیکل11میں ترمیم متعارف کروائی جس سے نیشنل پبلک سیفٹی کمشن کا آئی جی کی تقرری میں کردار ختم کردیا گیا ،اب یہ تقرر وفاقی اور صوبائی حکومتیں کریں گی ،یہ ترمیم آئین کے منافی ہے ،انہوں نے اس ترمیم کو کالعدم کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ نئے آئی جی کا تقرر پولیس آرڈر 2002ءکی روح کے مطابق کیا جائے ۔علاوہ ازیں سی سی پی او ،سی پی اوز اور ڈی پی اوز کے تقرر کے لئے بھی پولیس آرڈر پر عمل درآمد کا حکم دیا جائے ۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ہائی کورٹ یا سپریم کورٹ کے ریٹائرڈ جج کی سربراہی میں ایک خود مختار کمشن تشکیل دیا جائے جس کے ذمہ داریوں اور اختیارات میں پولیس آرڈڑ 2002ءپر عمل درآمد کی نگرانی کے علاوہ پولیس میں اصلاحات متعارف کروانے کے لئے سفارشات مرتب کرنا ہو۔

مزید :

لاہور -