فیصل آباد،سیاسی جماعتوں کی انتخابی سرگرمیوں میں تیزی،کانٹے دار مقابلے متوقع

فیصل آباد،سیاسی جماعتوں کی انتخابی سرگرمیوں میں تیزی،کانٹے دار مقابلے متوقع

فیصل آباد(خصوصی رپورٹر)فیصل آباد میں قومی اسمبلی کے دس حلقوں کیلئے اگرچہ سینکڑوں امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کروائے ہیں تاہم پاکستان تحریک انصاف، مسلم لیگ(ن)پیپلز پارٹی اورمتحدہ مجلس عمل کے مابین کانٹے دار مقابلے متوقع ہیں۔بعض امیدوار اگرچہ پارٹی بدل کر دوسری جماعت کے ٹکٹ کیلئے منتظر اور محو جستجو بھی رہے مگر سیاسی جماعتوں نے بھی اپنی طے شدہ حکمت عملی کے ساتھ انہیں ڈیل کر کے کاغذات نامزدگی داخل کرنے اور جانچ پڑتال تک ٹکٹ کے اعلان کو لٹکائے رکھا تاہم کافی حد تک تحریک انصاف اورمسلم لیگ ن ایم ایم اے پیپلزپارٹی کی جانب سے ٹکٹوں کی تقسیم کا فیصلہ ہو چکا ہے جس کے مطابق این اے 101سے پی ٹی آئی اے کے ظفر ذوالقرنین ساہی، ن لیگ کے عاصم نذیر ،پیپلزپارٹی کے طارق محمود باجوہ۔ این اے 102سے پی ٹی آئی کے نواب شیر وسیر، ن لیگ کے طلال چوہدری،پیپلزپارٹی کے شاہجہاں کھرل جبکہ آزاد سابق صوبائی وزیر محمد اکرم چوہدری اور ایم ایم کے مولانا ساجد فاروق امیدوار ہیں، این اے 103میں سعد اللہ بلوچ تحریک انصاف علی گوہر بلوچ ن لیگ ،شہادت علی خاں بلوچ پیپلزپارٹی ۔این اے 104سے پی ٹی آئی کے سردار دلدار احمد چیمہ، شہباز بابرن لیگ اور پیپلزپارٹی کے رانافاروق سعید خاں میں مقابلہ ہو گا۔ این اے 105میں سابق ایم این اے رانازاہد توصیف پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار ہیں، ن لیگ نے میاں فاروق کو ٹکٹ دیا۔ این اے 106میں سابق ممبر قومی اسمبلی چوہدری نثار احمد جٹ تحریک انصاف، ن لیگ کے رانا ثناء اللہ اور پیپلزپارٹی کے چوہدری سعید اقبال کے مابین مقابلہ ہو گا۔این اے 107میں پی ٹی آئی کے شیخ خرم شہزاد اور ن لیگ کے حاجی اکرم انصاری کے درمیان۔ این اے108میں تحریک انصاف کے رہنما فرخ حبیب اور ن لیگ کے عابد شیر علی ایم ایم اے کے مخدوم ذکریا کے درمیان مقابلہ کا امکان ہے، این اے 109 میں فیض اللہ کموکا کو پی ٹی آئی کا ٹکٹ ملنے کی امید ہے اگر یہ نام فائنل ہوا تو ان کا ن لیگ کے میاں عبدالمنان اور ایم ایم اے کے سردار ظفر حسین خاں کے ساتھ مقابلہ ہو گا ۔این اے 110میں راجہ ریاض پی ٹی آئی کے جبکہ رانا افضل ن لیگ اور صاحبزادہ حامد رضا کے مابین مقابلہ ہو گا۔

فیصل آباد/کانٹے دار مقابلے

مزید : صفحہ اول