سابق وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف کا حج کوٹہ کی تقسیم سے لا تعلقی کا اعلان

سابق وفاقی وزیر مذہبی امور سردار یوسف کا حج کوٹہ کی تقسیم سے لا تعلقی کا ...

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)پاکستان کی تاریخ میں 5کامیاب حج آپریشن کرانے والے وفاقی وزیر مذہبی امور سردار محمد یوسف اپنی ہی وزارت سے ناراض رخصت ہوئے، جاتے جاتے اپنے وفاقی سیکرٹری کے نام خط میں حج2018 ء کے لیے کوٹہ کی تقسیم سے لا تعلقی کا اعلان کر کے نیا پنڈورا بکس کھول دیا،خط کی کاپی وزیر اعظم ہاؤس اورNABکو بھی دے گئے ان کی ذاتی کوششوں سے سعودی عرب سے حج2018ء کے لیے ملنے والا 5ہزار اضافی حج کوٹہ کو نئے ٹورز اپریٹرز کو نہ دینے کا گلہ،نئی کمپنیوں کو دئیے گئے کوٹہ پر بھی تحفظات،سابق وفاقی وزیر سالہا سال سے کام کرنے والی کمپنیوں کا کوٹہ کم کر کے نئی کمپنیوں کو دینے کے لیے آخر تک بضد رہے اس معاملے پر وفاقی وزیر اور وفاقی سیکرٹری کے درمیان معاملات کشیدہ ہوئے اور وفاقی سیکرٹری کی طرف سے میرٹ سے ہٹ کر کام کرنے سے انکار کی خبریں منظر عام پر آتی رہیں ،وفاقی وزیر کے حلقوں کی طرف سے کبھی100اور کبھی200نئے ٹورز اپریٹرز کو کوٹہ دینے کی باتیں بھی گردش کرتی رہیں ،عملی طور پر سپریم کورٹ کی نامزد کردہ حج فارمولیشن کمیٹی نے وزارت کی اوپن ٹینڈر کے ذریعے منتخب کردہ نئی اور پرانی کمپنیوں کی سکیورٹنی کے لیے بنائی گئی چارٹرڈ فرم کی سفارشات کی روشنی میں متفقہ فیصلے کرتے ہوئے نمبرنگ اور گریڈنگ کے مطابق نئی کمپنیوں کا کوٹہ بحال رکھا اور چارٹرڈ فرم کی فراہم کردہ میرٹ کے مطابق میرٹ کے مطابق نئی کمپنیوں کو کوٹہ الاٹ کر دیااس دوران وزارت مذہبی امورپر سخت دباؤ سمیت نذرانوں کی خبریں بھی سامنے آتی رہیں ،حج فارمولیشن کمیٹی نے اپنا موقف نہیں بدلاجس کی وجہ سے وفاقی وزیر کے5سال خوشگوار تعلقات آخری گھنٹوں میں تلخ یادوں میں تبدیل ہو گئے ،وزارت کے ذرائع نے وفاقی وزیر کے وفاقی سیکرٹری کے نام لکھے گئے خط کی تصدیق کی ہے جبکہ سابق وفاقی وزیر کے ذرائع تصدیق کرنے سے انکاری ہیں،NABاور وزیر اعظم ہاؤس میں خط کی کاپی وصول ہونے کی تصدیق ہوئی ہے ،یاد رہے قومی اسمبلی اور سینٹ کی قائمہ کمیٹی اور سٹینڈنگ کمیٹی نے بھی حج2017ء میں مجاملہ ویزوں کی ادائیگیوں کے حوالے سے NABاورFIAکو تحقیقات کی سفارش کی تھی جس پر ایجنسیوں کی طر ف سے مختلف افراد کو نوٹس جاری ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔

مزید : صفحہ آخر