کالاباغ ڈیم کی تعمیر وقت کی ضرورت ہے، اعجاز احمد ہاشمی

کالاباغ ڈیم کی تعمیر وقت کی ضرورت ہے، اعجاز احمد ہاشمی

لاہور ( سٹی رپورٹر ) جمعیت علما پاکستان کے مرکزی صدر اور متحدہ مجلس عمل کے مرکزی نائب صدر پیر اعجاز احمدہاشمی نے کہا ہے کہ کالاباغ ڈیم کی تعمیر بہت ضروری ہے۔جس پر تمام صوبوں کو اتفاق رائے کرنا چاہیے۔ لیکن اس وقت جبکہ نگران حکومتی ڈھانچہ موجود ہے۔ اس حوالے سے مہم چلانا کسی صورت مناسب طرز عمل نہیں ہے۔ کیونکہ جب باقاعدہ حکومتیں اس پر فیصلہ موخر کرچکی ہیں ، سندھ اور خیبر پختونخواہ مخالفت کرچکے ہیں تو کچھ حلقوں کی طر ف کالا باغ ڈیم کی تعمیر کی مہم چلانا افسوسنا ک اور قومی انتشار پھیلانے کے مترادف ہے۔

مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کالا باغ ڈیم ایک تیکنیکی مسئلہ ہے جسے ضیا الحق کے مارشل کے دور ان اس وقت کے گورنر جنرل فضل حق نے متنازع بنانے میں منفی کردار ادا کیا۔ جس کے بعد سندھ اور خیبر پختونخواہ سے منظم طریقے مہم چلائی گئی۔ ان کا کہنا تھا کہ اتحا د وقت کی ضرورت ہے۔کسی تنازع میں الجھنے کی بجائے، حکومت ان ڈیموں کی تعمیر پر توجہ دے جن پر اتفاق رائے ہوچکا ہے۔ ہمیں متنازع ایشوز کو چھیڑنے کی بجائے قومی اتفاق رائے برقرار رکھنے کی ذمہ داری کااحساس کرنا چاہیئے۔ان کا کہنا تھا کہ کالاباغ ڈیم کی تعمیر نہ ہونے کے باعث ہر سال ہم اپنا پورا پانی سمند ر میں ضائع کررہے ہیں۔ اگر کالاباغ ڈیم تعمیر ہوجاتا تو ہماری توانائی اور زرعی ضروریات پوری ہوسکتی تھیں اور ان کے مسائل بھی پیدا نہ ہوتے مگر اس طرف توجہ نہیں دی گئی۔ جو ہم سمجھتے ہیں کہ مخالفین کے ساتھ بات چیت کرکے مسئلے کو حل کیا جاسکتا ہے۔ پیر اعجاز ہاشمی نے کہا کہ قومی اتحاد کسی ایک منصوبے کی نذر نہیں کرنا چاہیے۔ کالا باغ ڈیم اتفاق رائے کے پارلیمنٹ کو اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ مگر ابھی انتخابات پر توجہ کے باعث متنازع ایشوز کونہ اچھالا جائے۔ اس کا فائدہ کم اور نقصان زیادہ ہوگا۔یہ کام فوج کا مینڈیٹ ہے اور نہ ہی عدلیہ کو اس متنازع ایشو میں آنا چاہیے، یہ سیاستدانوں کا کام ہے۔ جس پر فیصلہ پارلیمنٹ اور مشترکہ مفادات کونسل کو کرنا چاہیے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4