مثالی پولیس کی کارکردگی ،سرکاری اہلکار کو زبردستی اٹھانے کی کوشش

مثالی پولیس کی کارکردگی ،سرکاری اہلکار کو زبردستی اٹھانے کی کوشش

نوشہرہ(بیورورپورٹ)حلقہ پٹوار میاں عیسیٰ میں مثالی پولیس کا نیا کارنامہ سرکاری اہلکار کو علی الصبح 4 بجے سفید کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکاروں نے پٹواری حلقہ کو گھر سے اٹھاکر نامعلوم جگہ پر لے جانے کی کوشش کی لیکن پٹواری کے اسرار پر انہیں ڈی سی آفس پہنچادیاگیا جہاں پر پولیس اہلکار نے سلطان باچا کے نام سے اپنا تعارف کرایا اور سی پیک سٹی کی موقع پر راتوں رات قبضہ کرنے کی منصوبہ پیش کیا ڈی سی نوشہرہ اور ان کے عملہ اور محکمہ مال نوشہرہ کو اس منصوبہ بارے کوئی علم نہیں تھا پولیس گردی کی بدترین مثال پر نوشہرہ بھر کے پٹواری سراپا احتجاج انجمن پٹواریان و قانون گویان کا نگران حکومت سے معاملے کی تحقیقات کرانے کیلئے ایک ہفتے کی ڈیڈ لائن بصورت دیگر انجمن پٹواریان وقانون گویان ضلع صوبہ اور بعد ازاں ملک گیر احتجاج پر مجبور ہوجائیں گے اس سلسلے میں انجمن پٹواریان وقانون گویان ضلع نوشہرہ کے صدر کاشف خویشگی، جنرل سیکرٹری طارق اکبر خیل، تحصیل صدر نوشہرہ شوکت علی گوہر اور متاثرہ پٹواری حلقہ میاں عیسیٰ بلال خان نے نوشہرہ پریس کلب میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ جمعرات کے صبح چار بجے حلقہ پٹوار میاں عیسیٰ کے پٹواری بلال خان کے گھر واقع نوشہرہ کلاں پر چند نامعلوم بغیر نمبر پلیٹ والی پرائیویٹ گاڑیوں میں سفید کپڑوں میں ملبوس مسلح افراد آئیں اور بلال کو گھر سے اٹھا کر ان کو کہا کہ سی پیک سٹی کا موقع پر قبضہ حاصل کرنے کی عرض سے میاں عیسیٰ جانا ہے لیکن حلقہ پٹواری بلال خان کے اسرار پر کہ ڈی سی آفس نوشہرہ یا محکمہ مال نوشہرہ کی طرف سے ایسا کوئی حکم نامہ جاری نہیں ہوا ہے اس لئے ڈی سی آفس نوشہرہ میں معلومات کرنے اواپنی تسلی کرنے ڈی سی آفس جانا ہوگا جہاں پر ڈی سی آفس کے عملے اور محکمہ مال نے سی پیک سٹی کے قبضے کے بارے میں کوئی حکم نامہ جاری نہیں کیا تھا دریں اثنا وہاں پر موجود ایک اہلکار نے انسپکٹر سلطان باچا کے نام سے اپنی شناخت کرائی انہوں نے کہا کہ گزشتہ پی ٹی آئی کی حکومت نے سرکاری ملازمین بلخصوص پٹواریوں کا جینا محال کررکھا تھا لیکن اب نگران حکومت کو بدنام کرنے کیلئے بھی وہ سلسلہ ختم نہ ہوسکا انہوں نے کہا کہ بلال پٹواری کے ساتھ جو واقعہ پیش آیا وہ پولیس گردی نہیں بلکہ پولیس کی دہشتگردی کی واضح مثال ہے انہوں نے نگران وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا جسٹس ریٹائرڈ دوست محمد خان ڈی سی نوشہرہ اور محکمہ مال نوشہرہ کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پٹواریوں کو تحفظ فراہم کیا جائے اور واقعے میں ملوث افراد کے خلاف ایک ہفتے کے اندر اندر کاروائی کریں بصورت دیگر صوبہ بھر میں احتجاج پر مجبور ہوجائیں گے۔

مزید : ایڈیشن 2 /پشاورصفحہ آخر