خیبرپخٹونخوا حکومت کی طرف سے دی گئی گندم معیاری ہے

خیبرپخٹونخوا حکومت کی طرف سے دی گئی گندم معیاری ہے

پشاور(بیورو رپورٹ )ڈسٹرکٹ فوڈ کنٹرولر چترال کے مطابق محکمہ خوراک کے پی کے کی طرف سے دیا گیاغلہ گندم، اعلیٰ کوالٹی اور معیاری ہے لیکن دور دراز مقامات پر قائم غلہ گودام انتہائی بوسیدہ اور خستہ حال ہو چکے ہیں جو کہ مٹی سے تعمیر کئے گئے تھے جس میں بڑا غلہ گندم اکثر اوقات ضائع اور خراب ہو جاتا تھا ڈی ایس پی چترال کے مطابق انہوں نے اس حوالے سے ڈائریکٹر فوڈکے پی کے،اور سیکرٹری خوراک کو اس صورتحال سے آگاہ کیا تو انہوں نے باقاعدہ15نئے گودام تعمیر کرنے کی منظوری دے دی جس کی وجہ سے اب ان خستہ ہال گوداموں کی جگہ نئے گودام تعمیر کر کے گندم ان گوداموں میں منتقل کر دی جائے گی جس سے آئندہ کیلئے غلہ گندم کے خراب ہونے کا احتمال مکمل ختم ہو جائے گا انہوں نے بتایا کہ محکمہ خوراک چترال کے گوداموں کے اس وقت کافی بڑی تعداد میں سٹاک موجود ہے جو پانچ ماہ کیلئے کافی ہے ڈی ایف سی چترال کے مطابق چترال کا گندم کوٹہ2010میں40ہزار ٹن گندم کوٹہ مختص تھاجبکہ اب2018میں کم ہوتے ہوئے600 ٹن باقی رہ گیا ہے عوام کی بڑی تعداد آٹا خرید رہی ہے حال ہی میں تعمیر ہونے والا چترال فلور مل کے مکمل ہونے سے چترال کے عوام کو ان کے دروازے پر وافر مقدار میں آٹا دستیاب ہو گا پہلے سے موجود فلور مل عوام کی ضروریات پوری کرنے میں ناکافی تھی اُن کا کہنا تھا کہ گزشتہ2010میں 3000ٹن گندم خراب ہوگئی جو کہ32روپے کلو کے حساب سے خریدی گئی تھی جو نیلامی میں4روپے فی کلو نیلام ہوئی نیلام کی گئی گندم 3000بوری پرمشتمل تھی اور محکمہ کی جانب سے ہر فوڈ پوائنٹ پر باقاعدہ4افراد پر مشتمل سٹاف موجود ہوتا ہے جو گندم کو محفوظ رکھنے میں ہمہ وقت مصروف رہتا ہے بی ایف سی چترال کے مطابق لوئر چترال 8اور اپر چترال میں بھی8نئے غلہ گودام تعمیر کئے جائینگے عوام کو ہر پوائنٹ پرترازو کے ذریعہ سپلائی کیجاتی ہے عوامی مسائل کے حل کیلئے ڈسٹرکٹ فوڈ آفس میں موجود عملہ عوام کو بروقت ترسیل مہیا کرنے کیلئے ہمہ وقت مصروف عمل ہیں چترال کی غیور عوام صوبائی حکومت کی مشکور و ممنون ہے کہ سرکاری گوداموں میں گندم سٹاک اعلیٰ معیار کا حامل ہے ضلع ناظم چترال کا کہنا ہے کہ فوڈ کنٹرولر چترال اور ان کی ٹیم عوام کی خدمت میں ہمہ وقت مصروف عمل ہے عوام میں مقبول ہیں۔

مزید : ایڈیشن 2 /پشاورصفحہ آخر