گوگل نے چوری شدہ موبائل فون ڈھونڈنا انتہائی آسان بنا دیا، لوکیشن سروس آن نہ ہونے کی صورت میں موبائل فون کیا کرے گا؟ ایسی خبر آ گئی کہ چور ڈاکو موبائل کو ہاتھ لگانے کا بھی نہیں سوچیں گے

گوگل نے چوری شدہ موبائل فون ڈھونڈنا انتہائی آسان بنا دیا، لوکیشن سروس آن نہ ...
گوگل نے چوری شدہ موبائل فون ڈھونڈنا انتہائی آسان بنا دیا، لوکیشن سروس آن نہ ہونے کی صورت میں موبائل فون کیا کرے گا؟ ایسی خبر آ گئی کہ چور ڈاکو موبائل کو ہاتھ لگانے کا بھی نہیں سوچیں گے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) کوئی بھی اپنے ’جان سے بھی پیارے‘ اور مہنگے سمارٹ فون کے چوری ہونے کا سوچ کر ہی گھبرا جاتا ہے اور خدانخواستہ اگر ایسا کچھ ہو جائے تو پھر اسے ڈھونڈنا انتہائی مشکل ہوتا ہے البتہ اگر پولیس بروقت کارروائی کرے تو اس کے ملنے کے کچھ امکانات موجود رہتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔یہ معصوم سی بچی فہد مصطفی کا ’خاکہ‘ بنا کر پروگرام میں لائی تو انہوں نے ایسا کام کر دیا جس کا کوئی تصور بھی نہیں کر سکتا تھا، پورا پاکستان غصے سے آگ بگولہ ہو گیا، جان کر آپ بھی غصے میں آ جائیں گے 

تمام معاملات کے پیش نظر سمارٹ فون آپریٹنگ سسٹمز میں ”فائنڈ مائی موبائل“ یعنی چوری شدہ یا گم ہو جانے والا سمارٹ فون ڈھونڈنے کے فیچرز موجود ہی جو وقت کیساتھ ساتھ بہتر ہو رہے ہیں تاہم گوگل نے حال ہی میں چند ایسی تبدیلیاں متعارف کروائی ہے کہ ان کے بارے میں جان کر ہی چور یا ڈاکو سمارٹ فون کو ہاتھ لگانے سے بھی گھبرائیں گے۔

اینڈرائڈ پوری دنیا میں استعمال ہونے والا سب سے بڑا سمارٹ فون آپریٹنگ سسٹم بن چکا ہے اور اگر اس کا حامل سمارٹ فون کھو جائے تو ”فائنڈ مائی ڈیوائس“ نامی فیچر کے ذریعے اسے تلاش بھی کیا جا سکتا ہے مگر اس کیلئے ضروری ہے کہ تلاش کئے جانے والے موبائل فون پر لوکیشن سروسز اور انٹرنیٹ آن ہو۔

گوگل نے اس مسئلے سے نمٹنے کیلئے ایک انتہائی زبردست فیچر متعارف کروایا ہے جس کے تحت فائنڈ مائی ڈیوائس ایپلی کیشن اب اس وائی فائی سے متعلق معلومات بھی بتائے گی جس کیساتھ کھو جانے والا موبائل کنکٹ ہوا تھا جبکہ ان تمام کنکشن کی فہرست بھی دیکھی جا سکے گی جس جس کیساتھ یہ ڈیوائس کنکٹ ہو گئی۔ یعنی اب اگر کوئی چور آپ کے سمارٹ فون کو کسی وائی فائی نیٹ ورک کیساتھ کنکٹ کرے گا تو پکڑا جائے گا۔

ضرور پڑھیں: بے ادب بے مراد

گوگل کا ایک اور فیچر یہ ہے کہ اگر آپ کا موبائل فون گم ہو جائے اور انٹرنیٹ کے ساتھ کنکٹ نہ ہونے کے باعث اس کی لوکیشن کے بارے میں معلوم نہیں ہو رہا تو فائنڈ مائی ڈیوائس ایپلی کیشن گوگل میپس کی ہسٹری سے آخری جگہ کے بارے میں بتائے گی جو اسے معلوم ہو گی جبکہ صارفین میپس ایپلی کیشن آن کر کے لوکیشن ٹائم لائن بھی دیکھ سکیں گے تاکہ گم ہونے والے سمارٹ فون کا ’پیچھا‘ کر سکیں۔

فائنڈ مائی ڈیوائس ایپلی کیشن گم ہونے والے سمارٹ فون کی بیٹری سے متعلق معلومات بھی فراہم کرے گی کہ فون مزید کتنی دیر تک آن رہے گا تاکہ صارف کو یہ معلوم ہو سکے کہ اس کے پاس اپنی ڈیوائس تلاش کرنے کیلئے کتنا وقت باقی ہے۔

جیسا کہ آپ جانتے ہیں کہ گم ہونے والے سمارٹ فونز کو کمپیوٹر یا کسی دوسری ڈیوائس کے ذریعے لاک کیا جا سکتا ہے اور ڈیٹا فارمیٹ بھی کیا جا سکتا ہے کہ اس پر رنگ ٹون بھی بجائی جا سکتی ہے لیکن مختلف ڈیوائسز کے حامل افراد کیلئے یہ مشکل ہوتا تھا کیونکہ ایپلی کیشن کا یوزرانٹرفیس اتنا آسان نہیں تھا۔ گوگل نے مختلف ڈیوائسز کے حامل افراد کیلئے اس ایپلی کیشن کا انٹرفیس بھی انتہائی آسان بنا دیا ہے۔

گم شدہ سمارٹ فون کو سمارٹ واچ کے ذریعے بھی ڈھونڈا جا سکے گا مگر اس کیلئے ضروری ہے کہ گم ہونے والے سمارٹ فون اور سمارٹ فون پر لوکیشن سروسز آن ہوں۔ اس کے علاوہ ”ہائے گوگل،! میرا فون کہاں ہے؟“ کہہ کر گوگل ہوم کے ذریعے بھی سمارٹ فون ڈھونڈا جا سکتا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /سائنس اور ٹیکنالوجی