ڈاکٹر کو درخت کے ساتھ باندھ کر 20 لڑکوں کی اس کی بیٹی اور بیوی کے ساتھ اس کی آنکھوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کیونکہ۔۔۔ ایسا واقعہ کہ روح کانپ اُٹھے

ڈاکٹر کو درخت کے ساتھ باندھ کر 20 لڑکوں کی اس کی بیٹی اور بیوی کے ساتھ اس کی ...
ڈاکٹر کو درخت کے ساتھ باندھ کر 20 لڑکوں کی اس کی بیٹی اور بیوی کے ساتھ اس کی آنکھوں کے سامنے اجتماعی زیادتی کیونکہ۔۔۔ ایسا واقعہ کہ روح کانپ اُٹھے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دلی(نیوز ڈیسک)بھارت میں گینگ ریپ کے واقعات یوں تو ہر روز ہی پیش آتے ہیں لیکن ریاست بہار میں پیش آنے والا تازہ ترین واقعہ ایسا لرزہ خیز ہے کہ جس کی تفصیلات جان کر واقعی انسان یہ سوچنے پر مجبور ہو جائے کہ اس دنیا میں کچھ انسانیت باقی رہ بھی گئی ہے یا نہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بدھ کے روز گایا شہر سے تعلق رکھنے والا ایک ڈاکٹر اپنا کلینک بند کرنے کے بعد اپنی اہلیہ اور بیٹی کے ساتھ گھر کو واپس جارہا تھا کہ راستے میں اوباش نوجوانوں کے ایک گروہ نے انہیں گھیر لیا۔ ان غنڈوں کی تعداد 20 سے زائد تھی جنہوں نے ڈاکٹر کو درخت سے باندھ دیا اور اس کی اہلیہ اور 15 سالہ بیٹی کو اس کے سامنے گینگ ریپ کا نشانہ بنانے لگے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ رات تقریباً 8 بجے سودیہاگاﺅں کے قریب پیش آیا۔ پولیس انسپکٹر جنرل نیئر حسنین خان کا کہنا تھا کہ تمام ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایاکہ یہی غنڈے اس بھیانک واردات سے قبل ویران سڑک سے گزرنے والے کچھ افراد سے نقدی اوردیگر اشیاءبھی لوٹ چکے تھے۔

یاد رہے کہ بھارت جنسی جرائم کے حوالے سے دنیا میں سرفہرست ممالک میں شمار ہوتا ہے۔ سال 2016ءکے اعدادوشمار کے مطابق 40000سے زائد ریپ کے واقعات کی پولیس کو رپورٹ کی گئی جبکہ انسانی حقوق تنظیموں کا کہنا ہے کہ ان واقعات کی اصل تعداد پولیس کو رپورٹ کئے گئے واقعات سے کئی گنا زیادہ ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی