آسٹریلوی فوجیوں نے افغان شہری کو قتل کرکے اس کی ٹانگ کے ساتھ ایسا شرمناک ترین کام کردیا کہ کوئی انسان سوچ بھی نہیں سکتا، ہنگامہ برپاہوگیا

آسٹریلوی فوجیوں نے افغان شہری کو قتل کرکے اس کی ٹانگ کے ساتھ ایسا شرمناک ترین ...
آسٹریلوی فوجیوں نے افغان شہری کو قتل کرکے اس کی ٹانگ کے ساتھ ایسا شرمناک ترین کام کردیا کہ کوئی انسان سوچ بھی نہیں سکتا، ہنگامہ برپاہوگیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک)مسلمانوں پر الزام عائد کیا جاتا ہے کہ وہ شدت پسند ہیں، مغرب کے دشمن ہیں اور ترقی یافتہ دنیا سے بلا وجہ کا عناد رکھتے ہیں، لیکن یہ سب باتیں کہنے والے شاید کبھی اس ظلم کی جانب نہیں دیکھتے جس نے دنیا کے کروڑوں مسلمانوں کی زندگی کو جہنم بنا رکھا ہے۔ ہمسایہ ملک افغانستان میں دو دہائیوں سے غیر ملکی افواج جو کچھ کر رہی ہیں اسی کو دیکھ لیجئے۔ عام افغانیوں کی زندگی کی ان کی نظر میں کیا اہمیت ہے اس کا اندازہ حال ہی میں سامنے آنے والے لرزہ خیز انکشافات سے بخوبی کیا جا سکتا ہے۔ 

ویب سائٹ stuff.co.nz کے مطابق دیگر غیر ملکی فوجیوں کی طرح آسٹریلوی فوجیوں نے بھی افغانستان میں بالائے قانون ہلاکتوں کا بازار گرم کر رکھا تھا۔ ایک موقع پر آسٹریلین فوجیوں نے ایک معذور افغانی شہری کو ہلاک کر دیا اور اس کی مصنوعی ٹانگ کو بطور ٹرافی اپنے پاس رکھ لیا۔ وہ پلاسٹک کی بنی اس کھوکھلی ٹانگ کو اپنے ساتھ واپس آسٹریلیا بھی لے گئے جہاں وہ اس میں شراب ڈال کر پیا کرتے تھے۔ 

فیئر فیکس میڈیا کی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ ان فوجیوں کا تعلق سپیشل ائیر سروس رجمنٹ سے تھا اور اسی ٹیم کے کچھ ارکان نے 2009ء میں افغانستان کی ایک جیل میں اپنے ایک نئے ساتھی کو ایک معمر قیدی کو ہلاک کرنے کا چیلنج بھی دیا تھا۔ وہ اس چیلنج کو ’خون بہانے کی رسم‘ قرار دیتے تھے جو ان کے ساتھ نئے شامل ہونے والے فوجیوں کو ادا کرنی پڑتی تھی۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نئے آنے والے فوجی نے سفید بالوں اور داڑھی والے جس معمر شخص کو قتل کیا اس پر شک تھا کہ وہ طالبان کا ساتھی ہے لیکن جس وقت اسے قتل کیا گیا وہ کسی طور پر بھی آسٹریلوی فوجیوں کیلئے خطرہ نہیں تھا۔

معذور افغانی کا قتل بھی ایک ایسا ہی واقعہ تھا۔ اس قتل کے عینی شاہدین دو افراد نے بتایا کہ لیونی ڈاس نامی آسٹریلوی فوجی نے ہتھکڑی میں جکڑے افغان شہری علی جان کو ایک چٹان سے ٹانگ مار کر نیچے گرایا جس سے وہ بری طرح زخمی ہوگیا۔ جب وہ زخمی حالت میں پتھریلی زمین پر پڑا تھا تو لیونی ڈا س نے مشین گن سے فائرنگ کرکے اس کی زندگی ختم کردی۔ رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ افغانستان میں غیر ملکی فوجی ممکنہ طور پر اس طرح کے قتل جب چاہیں اور جہاں چاہیں کر سکتے ہیں کیونکہ وہ خود کو ہر قانون اور ضابطے سے بالاتر سمجھتے ہیں۔ 

مزید : ڈیلی بائیٹس