امریکہ نے درآمدی اشیاء پر ٹیکس عائد کر کے تجارتی جنگ چھیڑ دی: چین

امریکہ نے درآمدی اشیاء پر ٹیکس عائد کر کے تجارتی جنگ چھیڑ دی: چین

بیجنگ(مانیٹرنگ ڈیسک)چین نے الزام عائد کیا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بیجنگ کی درآمدی اشیاء پر ٹیکس عائد کر کے تجارتی جنگ چھیڑ دی ہے۔چین نے کہاہے کہ وائٹ ہاؤس نے چین سے 50 ارب ڈالر کی درآمدات پر 25 فیصد ٹیکس نافذ کر کے پہلی گولی چلائی ہے۔چین کی وزارت تجارت کے مطابق امریکا نے پہلے سے اپنا ذہن تبدیل کر رکھا تھا اور اب انہوں نے تجارتی جنگ شروع کر دی ہے۔چین کی حکومت نے کہا ہے کہ امریکی ٹیکسز کے جواب میں واشنگٹن کی تقریباً 1100 اشیاء پر ٹیکس عائد کیا جائے گا جس میں چین کی ایرو اسپیس، روبوٹکس، مینو فیکچرنگ اور آٹو انڈسٹری شامل ہوں گی۔چینی حکام کے مطابق چین تجارتی جنگ نہیں چاہتا لیکن اپنے قومی مفاد، گلوبلائزیشن اور دنیا کے تجارتی نظام کے لیے چین اس قسم کے اقدامات کا بھرپور مقابلہ کرے گا۔چین نے مزید کہا ہے کہ ہم جلد ہی امریکی درآمدی اشیاء پر ٹیکس نافذ کریں گے جس کی شدت امریکا کی جانب سے عائد کیے گئے ٹیکسوں کے برابر ہو گی۔دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے خبردار کیا ہے کہ چین نے جوابی اقدام کیا تو مزید ٹیکس نافذ کرینگے۔

چین /الزام

مزید : صفحہ آخر