سکندر بوسن کی تحریک انصاف میں متوقع شمولیت‘ امیدواروں‘ پارٹی رہنماؤں کا احتجاج جاری

سکندر بوسن کی تحریک انصاف میں متوقع شمولیت‘ امیدواروں‘ پارٹی رہنماؤں کا ...

ملتان (نیوز رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف میں سابق وفاقی وزیر حاجی سکندر حیات بوسن کی متوقع شمولیت اور ملتان کے حلقہ این اے 154سے تحریک انصاف کے ٹکٹ پر الیکشن میں حصہ لینے کے خدشات پر پارٹی کے متعدد رہنما جن میں چوہدری خالد جاوید وڑائچ، ملک محمد عاصم ڈیہڑ، اور ملک (بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

اسحاق بچہ جوپہلے سے اس حلقہ میں الیکشن مہم کے سلسلہ میں رابطہ رکھے ہوئے تھے ان کی جانب سے پارٹی قیادت کو احتجاج ریکارڈ کراچکے ہیں جبکہ سابق رکن صوبائی اسمبلی ملک احمد حسین ڈیہڑنے اپنے ذاتی ملازمین اور کرائے کے افرا د کے ذریعے حاجی سکندر حیات بوسن کیخلاف مستقل بنیاد پر مظاہروں کا سلسلہ شروع کرکے پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی سمیت تحریک انصاف کے ووٹروں کو تقسیم کرنے کے باعث بن رہے ہیں۔ دوسری طرف بیس سے پچیس افراد روزانہ کی بنیاد پر حاجی سکندر حیات بوسن مخالف پلے کارڈ اٹھائے پریس کلب کے سامنے کچھ دیر نعرہ بازی کرکے دیہاڑ ی کھری کرکے رفوچکر ہوجاتے ہیں۔ حاجی سکندر حیات بوسن کی تحریک انصاف میں شمولیت بارے فیصلہ آئندہ چند روز میں متوقع ہے اور پارٹی کے مرکزی وائس چیئرمین مخدوم شاہ محمود قریشی سمیت متعدد ٹکٹ ہولڈرز اور دیگر انتظامی عہدیداران کی جانب سے حاجی سکندر حیات بوسن کی شمولیت پر دو ٹوک الفاظ میں واضح کیا گیا ہے کہ پارٹی کے فیصلے کومن وعن تسلیم کیا جائے گا حلقہ پی پی 213کے امیدوار بیرسٹر وسیم خان بادوزئی کے مطابق اگر پارٹی کی جانب سے حاجی سکندر حیات بوسن کو ٹکٹ دیا جاتا ہے تو پارٹی فیصلہ کو مقدم رکھتے ہوئے ان کی الیکشن مہم میں بھی بھر پور تعاون کیا جائے گا قبل ازیں این اے 154سے متوقع امیدواران ملک محمد عاصم ڈیہڑ، اسحاق بچہ اور چوہدری خالد جاوید وڑائچ کی جانب سے حا جی سکندر حیات بوسن کی متوقع شمولیت کیخلاف احتجاج ریکارڈ کرایا جارہا تھا تاہم ملک احمد حسین ڈیہڑ کی جانب سے ذاتی ملازمین اور کرائے کے احتجاجیوں کی رونق دیکھ پر پارٹی کے بانی امیدواروں نے چپ سادھ لی ہے کیونکہ الیکشن سے قبل ہی نوٹوں کے استعمال کا آغاز کردیا گیا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر