سپریم کورٹ کا شہری و صوبائی حکومتوں پر عدم اطمینان لمحہ فکریہ ہے: حافظ نعیم الرحمن 

سپریم کورٹ کا شہری و صوبائی حکومتوں پر عدم اطمینان لمحہ فکریہ ہے: حافظ نعیم ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ کراچی میں صفائی ستھرائی، عوامی مسائل و مشکلات،بدامنی اوراسٹریٹ کرائمز کی موجودہ صورتحال کے حوالے سے سپریم کورٹ کے معزز جج کی جانب سے عدم اطمینان شہری و صوبائی حکومتوں اور متعلقہ محکموں کی نااہلی اورناقص کارکرگی کا واضح ثبوت ہے۔ شہری و صوبائی حکومتیں بجائے اس کہ کے اپنی کارکردگی کو بہتر بنائیں اور اپنی ذمہ داریاں درست انداز میں ادا کریں، ایک دوسرے پہ الزامات عائد کرکے شہر کی بربادی اورحالتِ زارکے حوالے سے خودکو بری الذمہ قراردلوانے کی بھونڈی کوشش کررہی ہیں حالانکہ ماضی میں یہی دونوں جماعتیں اقتدار میں ایک دوسرے کی اتحادی رہی ہیں اور طویل عرصے تک باہم اقتدار کے مزے بھی لوٹتی رہی ہیں۔ دونوں جماعتوں نے مل کر شہر کی تعمیر وترقی کے لیے مختص وسائل کا بے دریغ استعمال کیا اور عوام کے لیے کچھ نہیں کیا۔انہوں نے کہاکہ ایک جانب وزیر بلدیات الزام عائد کررہے ہیں کہ شہر کی تعمیر و ترقی میں ایم کیوایم رکاوٹ بن رہی ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ جب صوبہ سندھ کے بلدیاتی اداروں میں غیر قانونی بھرتیاں ہورہی تھیں تب بھی پیپلز پارٹی ہی حکومت کررہی تھی اس وقت ایسی تمام غیر قانونی بھرتیاں کیسے ممکن ہوئی؟ انہوں نے کہاکہ دوسری جانب میئرکراچی حسب روایت اپنے اختیارات اور وسائل کا رونا رورہے ہیں اورشہر میں ترقیاتی کاموں کے نہ ہونے کا ذمہ دار صوبائی حکومت کو ٹھہرارہے ہیں حالانکہ موجودہ دستیاب وسائل اور مختلف پروجیکٹ کے لیے ملنے والی گرانٹس کو ایمانداری سے صحیح استعمال کیا جاتا توشہر میں صفائی ستھرائی کے ساتھ ساتھ بہت سے ترقیاتی کام ہوسکتے تھے لیکن دونوں جماعتوں نے اقتدار کے مزے اور شہری وسائل لوٹنے کے سوا کچھ نہیں کیا۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت کو اقتدار میں آئے ہوئے 10ماہ ہوگئے ہیں،وزیر اعظم عمران خان نے کراچی کے لیے 126ارب روپے کے پیکج کا اعلان بھی کیا لیکن ابھی تک کراچی کے لیے عملی طور پر کچھ نہیں کیا گیا اور وفاقی بجٹ میں بھی صرف 45ارب روپے کراچی کے لیے مختص کیے گئے،کراچی کی تعمیر و ترقی اور عوامی مسائل کے حل کے لیے وفاقی حکومت کو بھی اپنا کردار اداکرنا چاہیئے۔انہوں نے کہاکہ کراچی کی تاریخ گواہ ہے کہ شہر میں جب بھی جماعت اسلامی کو موقع ملا تو شہر میں مثالی ترقیاتی کام ہوئے،عبدالستار افغانی اور نعمت اللہ خان کے دور میں کراچی کی تعمیر وترقی اور عوامی فلاح و بہبود کے جو منصوبے اور پروجیکٹ مکمل ہوئے وہ کسی اور دور میں نہیں ہوئے۔عبدالستارافغانی کے ہی دور میں حب ڈیم سے کراچی کے شہریوں کے لیے پانی کی فراہمی کو یقینی بنایا گیا لیکن اس کے بعد پانی کے مسئلے کے حل کے لیے کچھ نہیں کیا گیا۔ اسی طرح نعمت اللہ خان نے اپنے دور میں K-3  منصوبہ مکمل کیا اور K-4 کا آ غاز کیا جو آج تک مکمل نہیں ہوا اور اس کی تمام تر ذمہ داری ایم کیو ایم اور پیپلز پارٹی کی حکومتوں پر عائد ہوتی ہے اس منصوبے کی عدم تکمیل کراچی کے عوام کے ساتھ سراسر ظلم اور ناانصافی ہے۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی موجودہ صورتحال میں شہریوں کو تنہا نہیں چھوڑے گی اور ماضی کی طرح آئندہ بھی کراچی کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنا کردار بھرپور انداز میں اداکرتی رہے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر