وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے
وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان 10 روزہ جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)احتساب عدالت نے غیرقانونی ٹھیکوں کے الزام میں گرفتار وزیر جنگلات پنجاب سبطین خان کے جسمانی ریمانڈ کی درخواست پر محفوظ فیصلہ سنا دیا،عدالت نے صوبائی وزیرسبطین خان کا 10 روزہ جسمانی ریمانڈمنظورکرلیا اور نیب کو 25 جون کو ملزم کو عدالت میں پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق احتساب عدالت کے ڈیوٹی جج وسیم اخترنے غیرقانونی ٹھیکوں کے الزام میں گرفتار صوبائی وزیر سبطین خان کے جسمانی ریمانڈ سے متعلق کیس درخواست کی سماعت کی،وکیل نیب نے ملزم کے 14 روزہ ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ میسرزارتھ ریسورسزکمپنی رجسٹرڈنہیں تھی،اس کمپنی کاکوئی رجسٹرڈدفتربھی موجودنہیں،پنجاب منرل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کیساتھ ارتھ ریسورسزکمپنی کاجوائنٹ ونچرکیاگیا،وکیل نیب نے کہا کہ سبطین خان پنجاب منرل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے چیئرمین بھی تھے،ملزم نے غیرقانونی طورپرجوائنٹ ونچرکی منظوری دی جبکہ قانون جوائنٹ ونچرکی اجازت نہیں دیتاتھا،وکیل نیب نے کہا کہ کمپنی کاکل سرمایہ 25 لاکھ تھاجس کی دستاویزات جعلی تھیں،عدالت نے وکیل نیب کے دلائل سننے کے بعد سبطین خان کے جسمانی ریمانڈ پرمحفوظ فیصلہ سناتے ہوئے ملزم کو10 روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا،عدالت نے ملزم کو 25 جون کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور